Archive for اردو ٹیک ڈاٹ نیٹ

اردو ٹیک کچن ۔۔

لوکی + چنے کی دال ( سارہ کی فرمائش )

لوکی اور چنے کی دال
٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪
اجزاء
٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪
لوکی ۔ آدھا کلو ۔
چنے کی دال ۔ آدھا پاؤ۔
پیاز ۔ باریک کٹی ہوئی 2 عدد۔
ٹماٹر ۔ 2 عدد درمیانے۔
ادرک لہسن پسا ہوا ایک چائے کا چمچہ۔
گرم مصالحہ ۔آدھا چائے کا چمچہ۔
پسی ہوئی سرخ مرچ ۔ حسبِ ضرورت۔
نمک ۔ حسبِ ضرورت ۔
آئل ۔ حسبِ ضرورت۔
بُھنا ہوا سفید زیرہ ( پِسا ہوا ) آدھا چائے کا چمچہ۔
ہلدی ۔ چٹکی بھر۔
ترکیب۔
٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪٪
لوکی کاٹ کر باریک ٹکڑے کر لیں،چنے کی دال صاف کر کے کچھ دیر کے لیئے بھگو دیں۔پیاز کو سنہری مائل فرائی کرلیں۔اب پیاز میں لوکی ، چنے کی دال اور سارے مصالحے، ٹماٹر،سوائے بُھنے ہوئے زیرہ کے سب ڈال دیں اور حسبِ ضرورت پانی ڈال کے چولہے پر چڑھا دیں ( میں تو پریشر کُکر استعمال کرتی ہوں ، سارہ تم اگر کُکر نہیں استعمال کرتی تو انداز سے اتنا پانی ڈالنا کے دال اور لوکی گل جائے مگر مکس نہ ہو) جب دال اور لوکی گل جائے اور گاڑھی ہوجائے تو بُھنا ہوا زیرہ چھڑک کے کچھ دیر دم پر رکھ دیں( سارہ دم اتنا دینا کہ دم نہ نکلے ) لوکی اور چنے کی دال تیار ہے ، روٹی یا سادہ چاول دونوں سے کھا سکتے ہیں ( سارہ ترکیب لکھ دی اب بناؤ تم اور بتاؤ کے پہلی بار چنے کی دال کے ساتھ لوکی کیسی لگی )

=======================

لوبیا کے پکوڑے ۔۔

اجزاء ۔
سفید لوبیا ۔ آدھا پاؤ ۔
6 عدد درمیانی سائز کی باریک کٹی ہوئی پیاز ۔
4 یا 5 ہری مرچ باریک کٹی ہوئی ۔
ہرا دھنیا باریک کٹا ہوا تھوڑا سا ۔
ادرک لہسن مکس پیسٹ 1 کھانے کا چمچہ ۔
پسی ہوئی سرخ مرچ آدھا چائے کا چمچہ ( حسبِ ضرورت کم یا زیادہ کر سکتے ہیں )
نمک حسبِ ضرورت ۔
آئل حسبِ ضرورت ۔
ترکیب ۔
لوبیا کو دھو کر کم از کم 6 سے 8 گھنٹے تک کے لیئے بھگو دیں ( رات میں بھگو دیں تو بہتر صبح پیس لیں ) پیستے ہوئے پانی صرف اتنا ڈالیں کہ لوبیا آسانی سے پس جائے ، اب لوبیا میں سارے مصالحے پیاز وغیرہ سب کچھ ڈال کر اچھی طرح مکس کر کے آدھا گھنٹے کے لیئے رکھ دیں ۔ہلکی آنچ پر گولڈن براؤن ہونے تک پکوڑے فرائی کریں جیسے مرضی پکوڑے بنائیں گول یا کباب کی شکل کے ۔اور کیچپ یا چٹنی کے ساتھ مزے سے کھائیں ۔
( اسی طریقے سے چنے کی دال کے پکوڑے بھی بنتے ہیں ، ادرک لہسن نہیں ڈالا جاتا چنے کی دال کے پکوڑوں میں )

===========================

آلو + چکن مکس پکوڑے ۔
اجزاء ۔
آلو 3 عدد درمیانی سائز کے اُبال کر میش کرلیں ۔
بون لیس چکن آدھا پاؤ ( بوائل کر کے باریک ریشے کرلیں )
ہری مرچ 5 عدد باریک کتری ہوئی ۔
ہرا دھینا تھوڑا سا باریک کترا ہوا ۔
پسی ہوئی سرخ مرچ ایک چوتھائی چائے کا چمچہ ۔
نمک حسبِ ضرورت ۔
بیسن 4 کھانے کے چمچے ۔
انڈہ ۔ 1 عدد ۔
پسی ہوئی سرخ مرچ چٹکی بھر ۔
نمک حسبِ ضرورت ۔
آئل حسبِ ضرورت ۔
ترکیب ۔
میش کیئے ہوئے آلو میں چکن کے ریشے ہرا دھینا ، ہری مرچ ، پسی سرخ مرچ اور نمک ملا کر اچھی طرح مکس کرکے چھوٹے سائز کے کباب بنا لیں ، اب بیسن میں انڈہ اور نمک مرچ شامل کر کے پیسٹ بنائیں پانی کی ضرورت ہو تو تھوڑا سا پانی بھی پیسٹ میں شامل کر لیں ، اب آلو کے کباب بیسن میں ڈبو کر فرائی کرلیں اور مزے سے کھائیں ۔ اس پکوڑے کے ساتھ ہری مرچوں والی دہی مزہ دیتی ہے ۔ ایک پیالی دہی میں 4 یا 5 ہری مرچ اور حسبِ ضرورت نمک ڈال کر بلینڈ کرلیں اور پکوڑے کے ساتھ مزے سے کھائیں ۔
=====================================

بِہاری کباب ۔۔

بِہاری کباب
اجزاء۔۔
گوشت ۔۔2 کلو (چربی اور ریشہ نہ ہو )
دہی ۔تین پاؤ ( ہلکی کھٹی )
کچا پپیتاباریک پسا ہوا ۔۔ 3 کھانے کے چمچ
ادرک پسا ہوا۔۔ 2 کھانے کے چمچ
لہسن پسا ہوا۔۔ 2 کھانے کے چمچ
خشخاش پسی ہوئی۔۔ 1 کھانے کا چمچ
پسی ہوئی سرخ مرچ۔۔۔ آدھا چائے کا چمچ
شان بِہاری کباب مصالحہ ( ایک پیکٹ )
نمک ۔۔۔ آدھا چائے کا چمچہ
آئل ۔۔۔ 2 کھانے کے چمچ۔
ترکیب۔۔
گوشت کے پسندوں کی طرح پارچے بنا لیں۔2 انچ لمبے اور آدھا انچ موٹے پارچے ہوں۔پارچے بنا کے گوشت دھو کر چھلنی میں رکھ دیں تاکہ گوشت کا سارا پانی اچھی طرح نکل جائے ۔دہی کو بھی کسی باریک ململ کے کپڑے میں باندھ کر لٹکا دیں تا کہ دہی کا سارا پانی نکل جائے ۔اب گوشت میں سارے مصالحے اور آئل ڈال کر اچھی طرح مکس کرکے گوشت کو 12 گھنٹوں کے لئے فریج میں رکھ دیں ( جیسے کہ رات کو رکھیں اور دوسرے دن 2 بجے کباب بنائیں ) گوشت کو سیخ میں پرو کر کوئلے پر کباب سینک لیں۔(پارچے سیخ میں اس طرح پرو لیں کہ پارچے آپس میں جڑے ہوئے ہوں اس طرح مصالحہ ضائع نہیں ہوگا ) کوئلے بلکل دہک جائیں تو کباب سینکیں کوئلوں میں آگ نہ لگی ہو ورنہ کباب جل جائیں گے۔
=====================================

حُسن + محبت ۔۔۔ کیوں ؟؟؟(اردو ٹیک پوسٹ )

کچھ دن پہلے اخبارِ جہاں میں ، میں ایک کہانی پڑھ رہی تھی ، ایک محبت کرنے والے جوڑے کا ذکر تھا ، دونوں کی منگنی ہو چکی تھی ، لڑکی بہت خوبصورت تھی اس لیئے لڑکے کو پسند تھی ،ایک دن ایک حادثہ لڑکی کے چہرے کو بری طرح متاثر کرتا ہے ، اُس کے بعد لڑکے کی محبت کم ہی نہیں بلکہ ختم ہو کے منگنی ختم ہو جاتی ہے ۔۔۔
جو خیال میرے ذہن میں آیا ہے تو عام سا اسی زمانے کا سادہ سا سوال ہے کہ کیا محبت ظاہری حسن سے ہی کی جاتی ہے ، باطن کی کوئی اہمیت نہیں ، یا کسی سے محبت ہو اور کسی حادثے کی وجہ سے اُس میں کوئی ظاہری تبدیلی آجائے تو کیا واقعی محبت ختم ہو جاتی ہے ،صرف اُس کہانی میں ہی نہیں رئیل لائف میں بھی ایسا ہی ہوتا ہے جو حسین ہے وہ بہترین ہے ۔محبت کے لیئے حسین چہرہ ہی کیوں اہمیت رکھتا ہے ، اور یہ صرف مخالف صنف کے لیئے ہی کیوں ہوتا ہے کہ حسین محبوب یا شریکِ سفر ہو تو محبت ہوگی ، والدین یا بہن بھائی اگر عام شکل و صورت کے بھی ہوں تو اُن سے محبت ہوتی ہے تو مخالف صنف کا حسین ہونا کیوں ضروری ہے 😕 اکثر نیٹ پر یا موبائل پر جیسا کہ آج کل رواج بن گیا ہے فرینڈ شپ ہو جاتی ہے ، بات کرنے کا انداز شخصیت متاثر کرے تو پسندیدگی بھی درمیان میں آجاتی ہے ، کسی سے دوستی ہو تو ظاہر ہے تصویر شئیر کرنے کی بات بعد میں آتی ہے ، اور تصویر ہر کوئی دکھانا پسند بھی نہیں کرتا ۔۔ اگر کسی سے بہت اچھی دوستی ہو جائے اور کبھی ملنے پر وہ دیکھنے میں اچھا نہ لگے تو کیا دوستی ختم ہو جائے گی؟؟ میں تو ایسا کبھی نہیں کروں گی ،اگر مجھ سے کسی کی بہت اچھی دوستی ہو اور کبھی دیکھنے کا اتفاق ہو تو شکل کی کوئی اہمیت نہیں ہوگی میری نظر میں ۔۔۔۔ویسے سب لوگ ایسے نہیں بھی ہوتے کہ ظاہری حسن سے متاثر ہوں ۔۔ صرف آواز سے باتوں کے انداز سے محبت ہو جائے تو شادی بھی ہو جاتی ہے ۔اس کی مثال ایف ایم کے پریزینٹر ہیں ، ایک کو تو میں بھی جانتی ہوں اُن صاحب کی آواز سے محبت کرکے لڑکی نے اُن سے شادی کی ۔۔۔ویسے میرا خیال ہے ایسا صرف لڑکیاں کر سکتی ہیں ، اتنا بڑا ظرف لڑکوں کا نہیں ہوتا۔۔

اردو ٹیک ڈاٹ نیٹ کی باقیات

اردو ٹیک ڈاٹ نیٹ تو مرحوم ہو چکا ، مگر اردو ٹیک پر میرے بلاگ “ شب “ کی کچھ پوسٹس مجھے مل ہی گئیں،  جن کا دم گُھٹ چکا تھا  😦  کچھ تحریریں پوسٹ کر رہی ہوں ۔۔ باقی اگلی قسط میں —-

کے ۔ ای ۔ ایس ۔ سی ۔ کے نواب ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
پرسوں دن کے 11 بجے لائٹ چلی گئی ، میں یہی سمجھی کہ لوڈ شیڈنگ ہے آ جائے گی ، کچھ دیر بعد لائٹ نے پھر جھلک دِکھائی پھر غائب اسی طرح 5 یا 6 بار ہوا تو میں نے امّی سے کہا ذرا پڑوس سے تو پتہ کریں سب کے ساتھ ایسا ہورہا ہے یا صرف ہمارے ساتھ ۔۔ پتہ کرنے پر پتہ چلا کہ محترمہ لائٹ صاحبہ کی یہ نوازش صرف ہم پر ہے ، کے ۔ ای ۔ ایس ۔ سی کا نمبر ملایا کہ شکایت لکھواؤں پتہ چلا نمبر بدل چکا ہے ، اپنے علاقے کے ، کے ۔ای۔ایس ۔سی کے آفس میں تو میں شکایت درج کروا دیتی ہوں بلکہ اچھی طرح سُنا بھی دیتی ہوں صلواتیں
مگر نمبر بدل چکا تھا تو بھائی کو آفس کال کر کے کہا کہ 118 پر شکوہ درج کروا دو اپنی لائٹ کا ۔۔118 پر ایک بار میں نے فون کیا تھا وہاں جو بھی تھا وہ بندہ بہت فضول تھا مجھے مشکل پڑی تھی لائٹ نہیں تھی میں اُس کو اپنا مسلئہ بتاؤں اور وہ پوچھے کہ او آپ اُس علاقے کی ہیں وہاں تو کنڈہ سسٹم ہے کنڈہ مار لیں ، میں بھی کم نہیں کوئی بات کرے اور میں چپ رہوں ایسا اب تک ہوا نہیں
اُس دن تو 118 پر اُس بندے کو اچھی طرح جواب دیئے شکایت لکھوائی اور اُس کے بعد توبہ کر لی کہ لائٹ نہ ہو بہتر مگر میں 118 پر کال نہیں کروں گی
شام تک 118 پر کافی بار بھائی نے شکایت لکھوائی کوئی سُنوائی نہیں ہوئی ، بھائی گھر آیا اور اپنے علاقے کے کے ۔ ای ۔ یس ۔ سی کے آفس گیا کہ ساتھ لے آئے اُن کو مگر وہ لوگ اتنے اچھے اُن کے ساتھ ہیں جو لوگ غنڈہ گردی کرتے ہیں ، بھائی کو کہا گیا کہ شفٹ بدلنے کا ٹائم ہے جیسے ہی دوسری شفٹ کی گاڑی نکلے گی آپ کے گھر آئے گی خیر ہم نے انتظار کرنا ہی تھا تو کرتے رہے ———-
رات کے 12 بجے پھر پوچھا جواب ملا کچھ دیر میں آ رہے ہیں ، کے ۔ ای ۔ ایس ۔ سی ، کے نواب — میں نے کہا اب میں کنڈہ لگاؤں گی اُدھر سے جواب ملا آپ دھمکی دے رہی ہیں ؟؟ میں نے کہا جو دل چاہے سمجھو ، میں نے جتنی بار شکایت کروائی سب کے نمبرز میرے پاس ہیں ہم بل دیتے ہیں فری میں تو لائٹ جلاتے نہیں اب اگر گاڑی نہیں آئی 30 منٹ تک تو کنڈہ لگاؤں گی پھر کرلینا جو مرضی میں آئے — اور فون بند کردیا ۔
4 بجے صبح نواب حضرات آئے پتہ نہیں کدھر ٹُن گاڑی چلا رہا تھا ڈرائیور کہ گاڑی ہمارے گھر سے کچھ دور گڑھے میں پھنس گئی — اُنھوں نے دوسری گاڑی منگوائی اور آ کر ہماری لائٹ چیک کی — 15 منٹ بعد فرمایا آپ کے سوئچ بورڈ میں خرابی ہے اُس کو ٹھیک کریں اور کہیں کچھ نہیں ہے بھائی کہہ کہہ کے تھک گیا کہ باہر جا کر چیک کرو جہاں سے کنکشن آ رہا ہے وہاں پرابلم ہے مگر نہیں جناب وہ کیوں مانتے چلے گئے ۔۔ ہم اُسی طرح بغیر لائٹ کے —-
بھائی کو کہا کہ کنڈہ لگانے دیں نیند کیسے سوؤں ؟؟؟ مگر نہیں لگانے دیا — پوری رات جاگنے کے بعد صبح جب بھائی نے پھر شکایت لکھوائی تو پتہ چلا کہ کوئی شکایت جو پہلے کروائی گئی تھی وہ ہے ہی نہیں ، کے ، ای ۔ ایس ۔ سی کے نواب عملے نے جا کر یہ کہا کہ ہم پرابلم ٹھیک کر کے آ گئے تو شکایت ختم کردی گئی تھی ۔۔ صبح کے ٹائم جو بھی تھا آفس میں وہ اچھا بندہ بلاآخر اُس نے پھر گاڑی بھجوائی اور دوسرے دن صبح 10 بجے ہماری لائٹ آئی — اللہ تیرا شُکر
اُس روز جب ہماری لائٹ نہیں تھی تو لوڈشیڈنگ بھی نہیں ہوئی ، آس پاس کے گھروں میں لائٹ ہم اندھیرے میں اُففف غصّہ الگ پریشانی الگ ، وہ شاپ والا جس نے کنڈہ لگا لگا کے ہمارا کنکشن خراب کیا تھا بھائی کو کہا کہ جا کر اُس کو کہہ دو اب لگایا نا تو کنڈہ پکڑوا دیں گے ہم
کے ۔ ای ۔ ایس ۔ سی ، کبھی نہیں سُدھر سکتا ، یونٹ اتنے مہنگے ہوگئے عوام بل دیتی ہے اور حشر یہی ہوتا ہے اور یہی ہوتا رہے گا شائد ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
میں چور نہیں ہوں ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بدتمیز ، کی ڈھٹائی سے کی گئی چوری مجھے اپنی کچھ معصوم چوریاں یاد دلا گئی —- اب یہ نہ سمجھ لے کوئی کہ میں ڈاکے شاکے مارتی ہوں
اب نہیں کرتی یہ حرکت مگر اسکول کالج میں فرینڈز کی تصویریں دیکھتے ہوئے کوئی تصویر اچھی لگتی تھی اور میں کہوں کہ مجھے دے دو تو نہیں ملتی تھی کیونکہ میری پسند بھی اکثر وہ تصویریں ہوا کرتی تھیں جن میں کوئی خاص لوگ ساتھ ہوتے تھے فرینڈز کے ، ایک سہیلی اسکول کی اُس کی منگنی ہوئی میں تصویریں دیکھ رہی تھی اُس کی ساس صاحبہ کے ساتھ اُس کی تصویر بہت پیاری آئی تھی میں نے مانگی نہیں ملی میں نے اُڑا لی
یہ الگ بات کہ چوری کی گئی کوئی تصویر چُھپی نہ رہ سکی میری فرینڈز جب بھی آتی ہیں سب کی فرمائش ہوتی ہے کہ تصویریں دکھاؤ ، میرے پاس ہر موقع کی تصاویر ہیں ، اور اُن البم میں کوئی بھی چوری شدہ تصویر دیکھ کر مجھے یہی سُننا پڑتا ہے کہ دیکھو ذرا اس چور کو ہم تلاش کر کر کے پاگل ہو گئے اور تصویر یہ لے کر آگئی تھی
اس کے علاوہ ایک بار منی پلانٹ چُرا کر بھاگی تھی — منی پلانٹ جب بھی لگاتی تھی وہ مُرجھا جایا کرتا تھا میری دوست نے کہا منی پلانٹ کسی گھر سے بغیر پوچھے توڑ کر لاؤ اور لگا لو دیکھنا لگ جائے گا — وہ منی پلانٹ بھی نہیں لگا تھا بعد میں خرید کر لگایا اب ہر طرف منی پلانٹ کی بہار ہے
کچھ دن پہلے بھائی نے کہا مجھے بہت اچھے ایس ایم ایس آئے ہیں مگر مجھے بھیجے نہیں بھائی نماز پڑھنے گئے موبائل گھر پر تھا میں نے اپنے نمبر پر ایس ایم ایس سینڈ کر کے ڈیلیوری رپورٹ ڈیلیٹ کی اور موبائل رکھ دیا مگر پکڑی گئی مجھے نہیں پتہ تھا کہ بھائی کے موبائل میں سینڈ میسج سیو رہتے ہیں ، پھر بڑی مشکل سے جان بخشی ہوئی کچھ باتیں بنا کر
ویسے تو بہت ساری حسین چیزیں دیکھ کر دل چاہتا ہے چُرا لی جائیں کسی کی مسکراہٹ ، کسی کے بات کرنے کا انداز ، کسی کے چہرے کا خوبصورت سا تِل اور کسی کی چھوٹی سی ناک بھی
میری ایک کزن کی چھوٹی سی ناک مجھے بڑی پیاری لگتی ہے میں ہمیشہ اُس کو کہتی ہوں بچا کے رکھنا کسی دن چوری نہ ہو جائے ناک
یہ تو تھیں میری کچھ چوریاں، ور کچھ حسین چوری کے اردے
ڈاکہ نہیں مارا اب تک سوچ رہی ہوں کہ —- آپ سب نے کبھی کچھ چُرایا ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ دل نہ لکھ دے کوئی دل کے علاوہ۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بھیگا بھیگا دسمبر ۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دسمبر کا مہینہ ہو اور ساتھ بارش ہو تو سردی کے موسم کا مزہ ہی اور ہوتا ہے ، یوں تو کل کی تیز بارش کے بعد اب تک سردی میں کوئی خاص کیا عام اضافہ بھی نہیں ہوا مگر موسم اتنا حسین ہے کہ بس ،گرجتے بادل ، تیز ہوا کے ساتھ زبردست سی بارش میں جھومتے درخت ،بوندوں کی ٹپ ٹپ ، کتنا حسین منظر ہے واہ ، خزاں کی وجہ سے بادام کے پتّے ریڈ ہو چکے ہیں ، ریڈ پتّوں سے بھرا ہوا آنگن بھیگے ہوئے پتّوں پر چلنا بہت اچھا لگتا ہے ،کینوں آج کل آدھے اورنج آدھے گرین ہیں بارش سے نکھر کراتنے حسین لگ رہے ہیں کہ بس ،ہری مرچیں دُھل کر نکھر گئی ہیں عید کے لیئے میک اپ ہو گیا سب پودوں کا ،:smile بارش کے بعد جو بوندیں پتّوںاور پھولوں پررک جاتی ہیں وہ منظر بھی دیکھنے میں خوبصورت لگتا ہے، رات کی رانی کی مہک اور ساتھ مٹی کی خوشبو اتنی خوبصورت ملی جلی سی مہک ہے دل چاہ رہا ہے ایسی مٹی کی مہک یوں ہی پھیلی رہے ، مگر ابھی تو عید ہے 3 دن بعد مزید بارش ہو تو میں بھی دسمبر کے مزے لوں ، ابھی تو صفائی دھلائی میں خرچ ہو گئی ہوں میں:nwh پھر عید کے کام ، مگر اتنا حسین موسم ہو تو اس حسین موسم کی خاطر صفائی کرنا دل و جان سے قبول ،بارش کے ساتھ ہی فرمائشوں کا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے یہ پکاؤ وہ کھلا دو بنا کے ، آج کی فرمائش کھیر کی تھی بہت پوچھا کہ کھیر کا کیا تعلق بارش سے جواب ملا پکوڑوں کے ساتھ کھائی جائے گی میں نے تو بارش انجوائے کر لی حسین نظاروں کے ساتھ بارش کے پکوان بنا کر جہاں بھی بارش ہو رہی ہے سب اس حسین موسم کے مزے لیں سوائے سارہ کے
بھیگنے کا اک مسلسل سلسلہ بارش میں ہے
کیا کسی موسم میں ہوگا جو مزا بارش میں ہے
یُوں کُھلی سڑکوں پر مت پھرنا کہ موسم غیر ہے
اک تو موسم غیر، پھر ٹھنڈی ہوا بارش میں ہے
سانس لیتے پھل ، لچکتی ٹہنیاں ، ہنستے گلاب
ایسا منظر بھی سرِ شاخِ حیا ، بارش میں ۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔