پت جھڑ اور بارش ۔۔۔۔

خزاں رخصت ہو رہی ہو ۔۔۔ شجر پتّوں سے خالی ۔۔۔ تھم تھم کے چلتی ہوا میں خشک پتّوں کی خوشبو بسی ہو ۔۔۔ آنگن بادام کے سرخ پتوں سے بھرا ہو اور بقول ناصر کاظمی پتّوں کی پازیب بج رہی ہو ، ایسے میں آسمان سُرمئی بادلوں سے بھر جائے اور ابرِ رحمت برسنے لگے ۔۔۔۔ کل صبح چار بجے ایسا ہی حسین منظر تھا ۔۔۔۔۔
خشک پتّوں پہ گِرتی بوندوں کا حسین ساز ۔۔۔۔ مٹی کی دلفریب خوشبو ۔۔۔۔ بھیگے پیڑ پودے ۔۔ رات کی خاموشی ۔۔۔ پل بھر کو زندگی بہت خوبصورت لگی ۔۔ دل نے چاہا وقت ٹھہر جائے اور میں اس منظر میں گُم ہوجاؤں ۔۔۔
سہانے موسم کے مزے لے کر جب میری صبح ہوئی موسم کی بے خودی کا خمار اتر چکا تھا ۔۔۔۔ بلاگ پوسٹ صبح پانچ بجے لکھ کر موبائل فولڈر میں محفوظ ہوچکی تھی ۔۔۔۔ خیال صرف یہ تھا کہ جھاڑو اور وائپر میرا منتظر ہے ۔۔۔۔
مورل : کوئی بھی کلر فُل شو مُفتا نہیں ہوتا قیمیت ادا کرنی پڑتی ہے 🙂

Advertisements

13 تبصرے »

  1. خشک پتوں پہ گرتی بوندوں کے ساز سے مجھے جھیل کے پانی پر گرتے بارش کے قطروں سے پیدا ہونے والی آواز یاد آگئی ،،، پچھلے سال نیو ایر نائٹ پر میں ایک دوست کے ساتھ کھڑا باتیں کر رہا تھا جھیل کے کنارے ۔۔۔ اور اچانک بارش شروع ہو گئی ،،، ہم دنوں کافی دیر تک کھڑے اس آواز کو سنتے رہے تھے ۔

  2. میں خوش ہوئ کے جب صبح سو کے اٹھوں گی تو آسمان بادلوں سے بھرا ہو ہوگا
    لیکن نہیں جی وہی ہمیشہ کی ظرح چلچلاتی دھوپ منتظر تھی

  3. ایک منٹ۔۔۔ کیا آپ اپنی پوسٹس لکھنے کے لیے اپنا موبائل استعمال کرتی ہیں؟ یا میں غلط سمجھا؟

  4. hijabeshab Said:

    انکل ٹام واقعی بارش کی آواز بہت خوبصورت ہوتی ہے ۔۔۔

    زینب ہاں صبح صرف رات کی بارش کے سائیڈ افیکٹ باقی رہ گئے تھے ۔۔۔

    احمد عرفان شفقت ، میں ہمیشہ پوسٹس ڈائری میں لکھتی ہوں لیکن کل موبائل ہاتھ میں تھا ڈائری دور تو موبائل میں لکھ کر سیو کر لی تھی ۔۔۔

  5. بارش کی آواز سے زیادہ تو مٹی کی خوشبو نہایت اچھی لگتی ہے۔ بائی دا وے حجاب یہ دسبمر کے بعد نیو ایڈیشن جنوری کا ہے؟ ویسے آپکو ایوارڈ ملنا چاہئیے سب سے زیادہ موسموں خصوصاً دسمبر پر لکھنے والا بہترین بلاگر :پ

  6. hijabeshab Said:

    عادل یہ خزاں میں بارش کا ایڈیشن ہے ، پھر ایوارڈ تیار کروائیں آپ 😛

  7. اسلام علیکم
    آپ کی یہ خوبصورت نمظر کشی بہت پسند آئی۔ اسے میں نے اپنے دوستوں کے ساتھ بھی شئیر کیا اور انہیں بھی یہ اچھی لگی۔ یوں لگا کہ میں بھی اسی منظر میں گم ہوگیا ہوں۔
    اللہ تعالیٰ نے آپ کو لکھنے کی بھرپور صلاحیت دی ہے۔ ایک تجویز ہے وہ یہ کہ اگر ایک دو تحریریں معاشرے کی اصلاح پر لکھ ڈالیں تو آپ کے پیغام یں مقصدیت بھی پیدا ہوجائے گی اور کئی لوگ ممکن ہے کہ آپ کی تحاریر سے متاثر ہوکر اپنی اصلاح کرلیں۔
    عقیل

  8. اسلام علیکم
    اگر وقت ہو تو یہ دلچسپ ناول جس نے کئی لوگوں کی زندگی بدل دی، ضرور پڑھئے گا۔ اور اگر ممکن ہو تو اپنے قیمتی تبصرے سے بھی نوازئیے گا۔

  9. hijabeshab Said:

    وعلیکم السّلام پروفیسر عقیل صاحب بلاگ پہ خوش آمدید ، آپ کی ہر تحریر ضرور پڑھتی ہوں مجھے خوشی ہوئی آپ کا تبصرہ دیکھ کر ۔۔ تحریر پسند اور حوصلہ افزائی کا بہت شکریہ ۔۔۔ آپ کے مشورے پر عمل کرنے کی کوشش کروں گی کہ کچھ ایسا لکھ سکوں جو کسی کے کام آجائے ، یہ ناول پڑھ کر تبصرہ کروں گی لیکن کچھ وقت لگے گا فی الحال امی کی طبعیت خراب ہونے کی وجہ سے پریشانی ہے میری امی کی صحت کے لیے دعا کیجئے گا ۔۔

  10. dieta Said:

    سنو ناراض ہو ہم سےمگر ہم وہ ہیںجن کو تو منانا بھی نہیں آتاکسی نے آج تک ہم سے محبت جو نہیں کی ہےمحبت کس طرح ہوتی ہے…ہمارے شہر کے اطراف میں تو سخت پہرا تھاخزاؤں کااور اُس کی فصیلیں زرد بیلوں سے لدی ہیںاور اُن میں نہ کوئی خوشبونہ کوئی ُپھول تم جیساکہ مہک اُٹھتے ہمارے دل وجاںجس کی قربت سےہم ایسے شہرِ پریشاں کی ویراں گلیوں میںکسی سُوکھے ہوئے زرد پتے کی طرح تھےکہ جب ظالم ہَواجب ہم پر اپنے قدم رکھتی تھیتو اُس کے پاؤں کی نیچے ہمارا دَم نکل جاتامگر پت جھڑ کا وہ موسمسُنا ہے ٹل چکا اب تومگر جو ہار ہونا تھیسو وہ تو ہو چکی ہم کوسنو۔ !ہارے ہوئےلوگوں سے تو رُوٹھا نہیں کرتےSuno…..Naraaz Ho Hum Se?Magar Hum Vo Hain Jin Ko To Manaana b Nahi AataKisi Ne Aaj Tak Hum Se Muhabbat Jo Nahi Ki HayMuhabbat Kis Tarah Hotii Hay?Hamary Shehar k Atraaf Mein ToSakht Pehra Tha Khizaon KaAur Iss Shehar-e-Preshan Ki FaseeleinZard Bailoon Se Ladi ThinAur Un Mein Na Khushboo Thi,Na Koi Phool Tum JaisaMehak Uthtey Hamary Deeda-o-Dil Jis Ki Qurbat SeHum Aisy Shehar Ki Sunsaan Galioon MeinKisi Sookhy Hoye Veeran Pattay Ki Tarah Se Thyk Jab Zalim Hawa Hum Per Qadam RakhtiTo Uss k Paaon k Neechay Hamara Dam Nikal JataMagar Pat Jharr Ka Vo MousamSuna Hay Tal Chuka Ab To[Magar Jo Haar Hona ThiSo Vo To Ho Chukii Hum KoSuno…..Haaray Hoye Logoon Se To Rootha Nahi Karty…!


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: