برائے فروخت ۔۔۔۔

صحت مند اچھی حالت میں چلتے پھرتے ۔۔۔۔۔۔۔ دل جلانے کے ماہر ۔۔۔۔۔۔۔ سردیاں آ رہی ہیں گیس کی کمی ہوگی ۔۔۔۔۔۔ دل کے جلنے سے گرمی کا احساس رہے گا ۔۔۔۔۔ جی بھر کے نظر انداز کر کے دل کی بھڑاس نکال لی جائے مگر ان پہ اثر نہیں ہوتا ۔۔۔۔۔۔ یعنی ڈھٹائی کی خوبیاں بھی ساتھ ملیں گی ۔۔۔۔۔ یہ ذکر ہے کچھ رشتے دار اور نیٹ شناساؤں کا جو فروخت کے لیئے حاضر ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کوئی خریدے گا کیا ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ قیمیت صرف ایک تبصرہ ۔۔۔۔۔۔۔۔ پہلے آیئے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پہلے پایئے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پھر جو مرضی سلوک کریں سانوں کی 🙄

Advertisements

16 تبصرے »

  1. Zia Khan Said:

    aray , koi kam ka member hay ya fair sub kakay Man’nay jaysay hain 🙂

  2. hijabeshab Said:

    یہ تو پوچھا ہی نہیں آپ نے ضیاء کہ کہیں آپ بھی تو فروخت کے لیئے پیش نہیں ہوگئے ہاہاہاہا

    • Zia Khan Said:

      Bata dain abb 😦 wasay na’cheez ke koi Qeemat nahi 🙂

  3. hijabeshab Said:

    پھر تو مبارک ہو ابھی آپ خریدار ہیں 🙂

  4. shahidaakram Said:

    ویسے آپس کی بات ہے حِجاب سردیوں کی آمد ،گیس کی لوڈ شیڈنگ کیا ہے یہ سب اور اب جلدی سے بتا دو کہ کِس نے دِل جلا دیا اب میری پیاری بہنا کا،،،میرا نام تو کہیں اریب قریب نہیں ہے دِل تو میرا بھی کُچھ جلا کر روشنی کرنے کا ہو رہا ہے لیکِن فی الحال تو اپنا ہی دِل سُرخ رُو ہو رہا ہے،،،،
    امّی کی طبیعت بھی بتاؤ کہ کیسی ہیں اب؟؟؟ میرا سلام بھی کہہ دینا اور حال بھی پُوچھ لینا یاد سے،،،

  5. کیا ہماری بھی کچھ قیمت ہے؟
    ہمارا خریدار کیا قیمت لگائے گا؟

  6. نيلام گھر کا ٹھيکہ کيا آپ کو مِل گيا ہے ؟ يا شيخ سعدی صاحب کی تصنيف کہانی کی طرح ۔ "يہ اُونٹ صرف 10 درھم ميں مگر اس کے گلے ميں جو بلی بندھی ہے وہ 100 اشرفيوں ميں ۔ شرط يہ ہے کہ دونوں کو اکٹھا ہی بيچا جائے گا”۔

    ورڈ پريس ميں تو آپ ايسے لوگوں کے تبصرے پر پابندی لگا سکتی ہين ۔ پھر جو تبصرہ چاہيں شائع کر ديں جو چاہيں حذف کر ديں

    اچھی بھتيجی ۔ عُرفی صاحب نے لکھا تھا ۔
    عُرفی تُو مَنديش زِ غُغائے رقيباں
    آوازِ سگاں کم نہ کُنَد رزقِ گدا را
    ترجمہ ۔ عُرفی تُو حاسدوں کے شور سے پريشان نہ ہو ۔ کُتوں کے بھونکنے سے کبھی گداگر کا رزق کم نہيں ہوا

  7. ہم تو اب کی بارکباڑ سے جان چھڑائی جا رہی ہے۔
    اس کا تو سیدھا سا حل یہ ہے کہ بھوسی ٹکڑے والے کو نیٹ شناسائوں اور فضول قسم کے جاننے والوں کا ایڈریس دے دیا جائے۔۔۔۔اور باقی کام اس پر چھوڑ دیں۔۔۔لیکن نیٹ شناسائوں میں کہیں بلاگستان والے تو نہیں شامل ہیں؟

  8. آوازِ سگاں کم نہ کُنَد رزقِ گدا را
    .
    .
    .
    پشاور سے کبھی کبھی جب نوشھرہ کینٹ جاتا تھا ،تو وہاں ایک مارکیٹ پر یہ مصرع لکھا ہوا ہوتا تھا۔

    کئی دفعہ ارادہ کیا کہ اسکو اپنے پاس لکھ کے رکھونگا ،لیکن بھول جاتا تھا۔
    یہاں لکھا ہوا دیکھا تو وہ سفر میں کیا ہوا ارادہ یاد آگیا۔

    ابھی تک تو قربانی کے جانوروں کے دل جلاتے تھے لیک شائد اب انسانوں کی باری آئی ہے۔

    چلو اچھی افر ہے۔

  9. hijabeshab Said:

    سب کا شکریہ ، ویسے فی الحال اس میں بلاگستانی شامل نہیں ہیں بے فکر رہیں آپ سب 🙂

    • گویا بلاگستانی اتنے سستے کہ مارکیٹ میں کوئی گاہک ہی نہیں اسلئے حجاب ہول سیل ڈیلر بے التفاتی ہی فرماتی ہیں۔چلو ایسے ہی سہی۔

      • hijabeshab Said:

        درویش خراسانی آپ اس طرح کیوں نہیں سوچتے کہ بلاگستانی بہت قیمیتی ہیں … اس لیئے انمول ہوئے اور نایاب چیزوں کی سیل نہیں لگتی ۔۔ 🙂

  10. تمہارا سٹاک بک جاۓ تو میرا ماج حاضر ہے

  11. مال

  12. hijabeshab Said:

    زینب خریدنے کی بات کرو کتنے لو گی ساتھ ۲ فری تمہارے لیئے ۔۔۔ پھر اپنا مال ٹھکانے لگانا ۔۔۔۔۔


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: