عبداللہ کو خراجِ تحسین ۔۔ ۔۔۔۔۔

جب ہم پرانے محلّے میں رہا کرتے تھے ، ہماری ایک محلّے دار اکثر دادی سے ملنے آیا کرتیں تھیں ۔۔۔ پر نور چہرہ ، سفید لباس ، سلیقے سے اوڑھا ڈوپٹہ بہت نفیس خاتون تھیں ۔۔۔ ان کو صرف ایک دکھ تھا جس کا ذکر اکثر وہ دادی سے کیا کرتیں ۔۔۔ یہ ذکر تھا ان کی پوتی عابدہ کا ۔۔۔۔
بچپن سے ہی عابدہ کم گو اور ڈرپوک تھی ، گھر میں بہن بھائی میں لڑائی ہوتی قصور کسی کا ہوتا عابدہ بلاوجہ پٹ جاتی ۔۔۔ اسکول میں بچے اس کی چیزیں چھین لیتے اپنی شرارتوں پہ عابدہ کا نام لگا دیتے ۔۔۔ اس طرح عابدہ میں کم گوئی کے ساتھ ضد ، چڑچڑا پن تشدّد پسندی بڑھتی گئی ، وہ منہ سے کچھ نہیں کہتی تھی مگر ایسی حرکتیں کرنے لگی جس سے دوسروں کو نقصان پہنچے ۔۔۔ دادی بہت سمجھاتیں مگر عابدہ پر اثر نہ ہوتا ۔۔۔
تعلیم ختم ہونے سے پہلے ہی عابدہ کے لیئے ایک رشتہ آیا ، دیکھنے میں اچھے لوگ تھے اس لیئے مزید چھان بین کیئے بغیر ہاں ہوئی اور عابدہ بیاہ کے چلی گئی ۔۔۔ سسرال کا ماحول میکے سے مختلف نہ تھا ۔۔ نندیں اور دیور کم عمر تھے چیخ پکار مچی رہتی ۔۔۔ عابدہ کا شوہر گھر والوں کا غصّہ عابدہ پر نکالتا ۔۔۔۔ عابدہ نفسیاتی ہوتی جا رہی تھی ۔۔۔ لوگوں کے سامنے نہ جاتی کوئی بات کرے تو کمرے میں جا کے چھپ جاتی ۔۔۔۔ ایک پڑوسن نے اس کو سگریٹ کی عادت لگا دی ، ایک دن شوہر نے دیکھ لیا ۔۔۔ وہ دن سسرال میں آخری دن ثابت ہوا ۔۔۔۔۔
اس حادثے کے بعد عابدہ بلکل بدل گئی ۔۔ سگریٹ پینا ، ہر وقت باہر گھومنا ، جھوٹ بولنا ، بات کو بڑھا چڑھا کر بیان کرتی اس طرح کے لوگ مرعوب ہوں ۔۔۔ دادی سمجھاتیں کہ بیٹا جب تک میں ہوں یہ عیاشیاں ہیں کوئی ہنر سیکھ لو تاکہ میرے بعد کام آئے ۔۔۔
عابدہ نے کمپیوٹر سیکھ لیا اور مثبت کی بجائے منفی استعمال کرنے لگی ۔۔۔ مردانہ نام سے ہر بات کرتی جو عورت ہوتے ہوئے نہیں کر سکتی تھی ۔۔۔۔ اپنی ہم مزاج نیٹ فرینڈز سے اس کی خوب بنتی ۔۔۔ لیکن جو اس کو اپنے مخالف لگتے ان کو تنگ کرنا اس کی عادت بن گئی ۔۔۔ لوگ برا کہتے اس پہ اثر نہ ہوتا ۔۔۔
دادی کو وہ اپنے قصّے سنا کے بہت ہنسا کرتی ۔۔۔ سیدھی سادی دادی نے سوچا میری عابدہ ایسی تو نہیں تھی ۔۔۔ کہیں عابدہ پاگل تو نہیں ہو رہی ۔۔۔۔۔۔۔۔ محلّے کے ایک سیانے سے مشورہ کرکے ماہرِ نفسیات کے پاس لے گئیں ۔۔۔۔ تفصیلی معائنے کے بعد ڈاکٹر نے کہا ، اب عابدہ دوہری شخصیت کی مالک ہے ۔۔۔ آپ کے ساتھ بات کرتے ہوئے خود کو عابدہ سمجھتی ہے لیکن اس کی بنائی ہوئی خیالی شخصیت عبداللہ اس وقت بھی اس کے ذہن میں موجود ہوتی ہے اس لیئے آپ کو عابدہ پہلے سے بدلی ہوئی لگتی ہے ۔۔۔ آپ نے عابدہ اور عبداللہ کو الگ کرنا چاہا تو عابدہ پاگل ہوجائے گی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دادی !!!!!!!!!!! کتنا ظلم کیا ۔۔۔ بِنا تفتیش کیئے کہ لڑکا کیسا ہے عابدہ کی شادی کردی ، نہ شوہر ظالم نکلتا نہ عابدہ کو مردوں سے نفرت ہوتی ۔۔۔ نہ عابدہ عورت کو برا کہنے اور اس کے خلاف لکھنے والے کو بددعا دیتی 😛
( عبداللہ ، آپ انجوائے کر رہے تھے اب اور زیادہ انجوائے کریں ….

Advertisements

59 تبصرے »

  1. Shayad kay Uttar Jai Abdullah Auntie ohh I mean Abida Auntie kay Demagh main :))

  2. ZAINAB Said:

    🙂 🙂 😉

  3. واؤ…..اتنا زبردست تجزیہ ….مبارک بعد کی مستحق ہیں آپ ..مجھے نہیں معلوم تھا کہ آپ عابدہ (عبداللہ ) کے بارے میں اتنا کچھ جانتی ہیں. بڑا افسوس ہوا عابدہ (عبداللہ ) کی کہانی سن کر.اگرمجھے یہ سب کچھ معلوم ہوتا تو میں ہر گز عابدہ (عبداللہ ) سے نہیں الجھتا .
    برائے مہربانی آخری پیراگراف ہٹا دیں ..تحریر کی سنجیدگی متاثر ہو رہی ہے .

  4. hijabeshab Said:

    ڈاکٹر جواد ، یہ عبداللہ کو خراجِ تحسین ہے ۔۔ آخری پیراگراف اس لیئے لکھا کہ حسبِ معمول میرا مقصد شرارت ہے باقی سمجھنے والے پر ہے کہ وہ کیا معنی اخذ کرے ۔۔۔

  5. ilm ka mutlashi Said:

    us shararet ka kya fayda jo bta k or samjha k ke jaye…..waisy zaberdast likha hy aap ny……bat to tab bany ge jab zia bhai ke bat pori ho k abida aunty k dil main aap ke baat utr jaye…..

  6. Abdullah Said:

    خوب تو تلملاہٹ اپنے عروج پر ہے!
    I am realy enjoying this,
    🙂

  7. hijabeshab Said:

    علم کا متلاشی ، بلاگ پر خوش آمدید ۔۔۔ اورشرارت اس لیئے بتائی ہے کہ شائد کسی کے عقل میں منفی کی بجائے مثبت سوچ آ جائے ۔۔

    عبداللہ ، ٹھیک سمجھے آپ ۔۔۔ آپ کی بددعا مجھے بے حد بری لگی ۔۔ اس لیئے کہ جب میں نے آپ کو کچھ نہیں لکھا تھا تو آپ نے کیوں بددعا لکھی ۔۔۔ برا ہو لہجہ تو بات بھی بری کیوں نہ لگے ۔۔۔ میں کوئی سایہ نہیں ہوں کہ چوٹ ہی نہ لگے ۔۔۔ آپ کی جو مرضی وہ سمجھ کے آپ انجوائے کریں ۔۔ باتیں آپ کی بڑی بڑی ہوتی ہیں مگر کاش پہچاننے والی نظر بھی ہوتی ۔۔

    • yeah aqal kay andhay ankhon pay Antie/Uncle ki mohabbat ki patti baandh laytain hain to gumaan ziada karnay lagtay hain.

      • آنٹی عبداللہ۔۔۔ آپ اپنے کمزور شوہر پر ہاتھ مت اٹھائیے گا۔۔۔ خواہ وجہ کوئی بھی ہو۔۔۔

    • Abdullah Said:

      میں نے شائد اس لیئے بھی آپکی اس پوسٹ کو بہت زیادہ محسوس کیا،
      کہ چند میری بہت قریبی خواتین اپنی تمام تر قربانیوں کے باوجود اپنے شوہروں کے احساس کمتری کی وجہ سےانکے تشدد کا شکار بنی ہیں اور اسی لیئے ایسی باتوں میں کم سے کم مجھے مزاح محسوس نہیں ہوتا،میرے نزدیک یہ نری جہالت ہے کہ اپنے سے کمزور پر ہاتھ اٹھا یا جائے خواہ وجہ کوئی ہی ہو

  8. آپ کے نفسیات پڑھنے کا ہمیں کچھ نہ کچھ فائدہ تو ہوا نا۔
    یہ عبد اللہ آنٹی واقعی بیچاری ہے۔
    اس میں اس کا قصور بھی تو نہیں ہے نا۔
    جب بچپن سے ہی اس بیچاری کے ساتھ یہی کچھ ہوا ہے تو
    اس سے اچھائی کی امید کرنا ۔۔۔۔۔بہت مشکل ہے جی۔
    بارہ سنگھا سمجھ کا ذبحہ کریں اور حلیم بنائیں۔

  9. ویسے یہ بھی ہو سکتا ہے کہ عابدہ بڑی ڈاڈی عورت ہے ، اور اپنے شوہر کو مارتی ہے اسی لیے اسکا شوہر اتنا ڈر چکا ہے کہ اگر خود بھی کہیں عورت کے خلاف کچھ سنے تو لڑنے بیٹھ جاتا ہے ، عابدہ نے مار مار کے اسکی نفسیات میں یہ بات بٹھا دی ہے ۔

  10. بہت خوب لکھا، اور آخری چند جملے پڑھ کر ہی اس کی شان نزول کے بارے اندازہ ہوا۔ جانے بھی دیں۔ کیوں عزت سادات گنوا رہی ہیں۔ ایک دو اور کہاوتیں بھی ہیں مگر پھر کچھ لوگ کہیں گے کہ ان کو کتوں سے تشبیہہ دی۔

  11. ارے آپ نے تو وہ کر دکھايا ہے جو کوئی ابھی تک نہ کر سکا تھا ۔ ميں چونکہ عبداللہ نام کے درجنوں تبصرے پڑھ چکا ہوں اور درجنوں بغير پڑھے حذف کر چکا ہوں ۔ مجھے يوں لگ رہا ہے کہ آپ نے عبداللہ کو صحيح پہچانا ہے

  12. ہائے کیا ظلم ہوا۔ کیا دنیا ہے۔ کیا لکھنے والے ہیں۔ ہائے کسے بتائیں ہم مفت میں بے نقط لکھتے رہے اور بے چاری عابدہ آپی پہ پتہ نہیں کیا گزرتی رہی۔

    ایک عدد پوسٹ عابدہ آپی سے اظہار ہمدردی میں لکھی جائے۔ بے چاری عابدہ آپی نے عبداللہ کے نام سے کیا کیا جوروستم نہیں جھیلاـ۔

  13. شازل Said:

    حجاب آپ کی اس پوسٹ کی وجہ سے مجھے آپ کی سابقہ پوسٹ دوبارہ پڑھنا پڑھی اور تبصرے بھی۔
    ویسے عبداللہ صاحب کبھی کبھار اچھی بات بھی کرجاتے ہیں لیکن پھر دوسرے ہی لمحے اپنے پرانے تاثر کو یکسر مٹاڈالتے ہیں۔

  14. جعفر Said:

    جبکہ شوہر کے چھوڑنے کے بعد عابدہ کی دوستی ایک خرانٹ قسم کے انکل سے بھی ہوگئی جو خود بھی دہری شخصیت رکھتا تھا۔ اور۔۔ اور۔۔۔ اور۔۔۔۔

    • خرانٹ انکل سے ملنے کے بعد کیا ہوا ….اس پر بالمشافہ گفتگو میں دریافت کیا جائے …( ١٨ سال سے کم عمر اس بارے میں کچھ بھی پوچھنے کی زحمت نہ کریں )

      • میرا شناختی کارڈ کل ہی بن کر آیا ہے
        میکی تے دسسو نا؟

  15. اپ کی اس تحریر کا جدت خیال اور تصوراتی پن بہت خوب ہے
    آپ کہانی گو لگیں ہیں اس پوسٹ سے
    😦

  16. حجاب بہت خوب۔۔۔ آپ تو اچھا لکھ لیتی ہو بس عنوان ملنے کی دیر ہوتی ہے آپکو۔۔۔ ہماری بھی چھٹی حس کُچھ ایسے ہی پسِ منظر کی طرف اشارہ کرتی ہے۔

  17. خالد حمید Said:

    بہت خوب، لیکن اگر آپ آخری بات کو کمنٹس میں لکھ دیتیں تو مزہ دوبالا ہوجاتا

  18. ویسے ٹیکنیکلی یہ آخری پیرا ہٹانا ہی بنتا ہے۔۔۔تحریر کے دم کو قائم رکھنے کے واسطے۔

    آخری پیرے کے کانٹینٹ کو حذف نہیں کرنا، صرف اسکی جگہ بدلنی ہے: اس کو تحریر کے مرکزی کردار کے کسی کمینٹ کے جواب کا حصہ بنایا جا سکتا ہے۔۔۔ باآسانی۔

    آپ کی قلمکاری کی صلاحیت پر رشک تو پہلے سے ہی کرتا رہا ہوں میں۔ آپکی قلمی مہارت کی بابت میرے ادراک کو آج اور بھی زیادہ تقویت ملی ہے۔

  19. چلیں جی آپ بھی متاثریں میں‌شامل ہوگئی ہیں۔
    ویسے یقین کریں اگر جتنی بے عزتی اس بندے کی ہوئی ہے اگر میری ہوئی ہوتی تو میں کب کا بلاگ لکھا ہی چھوڑ‌چکا ہوتا لیکن کیا کریں عادت سے مجبور ہیں

  20. محمد سعید پالن پوری Said:

    معصوم معصوم پوسٹ کرنے والی معصوم کو بھی بھٹکا ڈالا،

  21. یار۔۔۔ جتنی اس بے چاری آنٹی عبداللہ کی ہو گئی ہے۔۔۔ انسانیت کے ناتے مجھے اس پر رحم آنا شروع ہو گیا ہے۔۔۔ لیکن پھر یہ سوچ کر کہ یہ آنٹی انسانوں میں تو شمار ہوتی نہیں۔۔۔ سکون آ جاتا ہے۔۔۔ کہ چلو۔۔۔ ہور کر۔۔۔ یہ اسی قابل ہے۔۔۔

    نا سینگھ پھسنائے اپنے ہر جگہ۔۔۔ تمیز کا پرچار کرنے والا بندہ خود بدتمیز ہے۔۔۔ منافقت کے فتوی جاری کرنے والا خود کو کیسے کیسے منافق ثابت کرتا ہے۔۔۔ اللہ ہی عقل دے اسے تو دے۔۔۔ دنیا کے تجربوں سے تو اسے سیکھنا آتا ہی نہیں۔۔۔

  22. hijabeshab Said:

    سب کی خواہش پر میں آخری پیراگراف ڈیلیٹ کر دیتی ہوں ویسے تو اب فائدہ نہیں لیکن پھر بھی آپ سب کی فرمائش پوری کردوں 🙂

    عبداللہ ، مجھے اب دعا نہیں چاہیئے ۔۔ آپ اپنی بد دعا پر قائم رہیں ۔۔ آپ نے اپنے ارد گرد رہنے والی عورتوں پر ظلم کی وجہ سے مجھے بددعا لکھ دی ۔۔۔ جبکہ میں نے اپنی اس فرضی کہانی میں بھی آپ کے لیئے کوئی برا لفظ استعمال نہیں کیا ۔۔۔ طلاق آپ کو نہیں دلوائی ۔۔۔۔ پاگل ہونے سے بھی بچا لیا ۔۔۔ 😛 آپ کے نزدیک کمزور پہ ہاتھ اٹھانا جہالت ہے۔۔۔۔۔۔ میرے نزدیک بلاوجہ کسی کو کچھ کہنا جاہلیت ہے ۔۔۔ یہ نیٹ ہے اور لکھ کر کچھ بھی کہا جائے دوسرے پر فرق نہیں پڑتا ۔۔ مجھے رئیل لائف میں ایسا کچھ کہے کوئی وہ بھی بلاوجہ تو اس کا منہ توڑ کے ہاتھ میں دے دوں ۔۔۔۔

    یاسر ، جو کہنا تھا کہہ لیا ۔۔۔ جو شخص باتوں کو نہ سمجھ سکے اس سے اور کیا امید رکھنی ۔۔۔۔

    انکل ٹام 🙂

    منیر عباسی ، میں نے تو صاف گوئی سے جو برا لگا اس پر بات کی اور باعزت طریقے سے لکھا ۔۔۔ رہی بات عزتِ سادات کی تو میں شیخ ہوں 😛

    اجمل انکل ایسا بھی کچھ خاص نہیں کیا ۔۔

    جاوید گوندل صاحب 🙂

    شکریہ شازل کے آپ نے پوسٹ دوبارہ پڑھی ، رہی بات عبداللہ کی تو لڑائی جھگڑے اپنی جگہ ۔۔ میں نے کبھی برا نہیں سمجھا عبداللہ کو ۔۔۔

    جعفر ۔۔۔ اور اور ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ 🙂

    بلا امتیاز ، مجھے بھی یہ 2 کہانیاں لکھ کر اندازہ ہوا کہ میں کہانی لکھ سکتی ہوں ۔۔۔ اور آج بھی آپ سیڈ اسمائلی کیوں بھلا 😦

    شکریہ عادل ۔۔۔

    بلاگ پر خوش آمدید خالد حمید صاحب ۔۔

    احمد عرفان شفقت شکریہ ۔۔۔ اور سب کی خواہش پر آخری پیرا گراف ہٹا ہی دیتی ہوں ۔۔۔

    خرم ، میں متاثرین میں شامل نہیں ہوئی ۔۔۔ بلاوجہ کی گئی بات پر کھوپڑی گھوم جاتی ہے بس ذرا ہلکی گھومنے دی ہے 😛

    محمد سعید پالن پوری صاحب بلاگ پر خوش آمدید ۔۔۔ فکر ناٹ میری وہ معصوم تحریریں ایک طرح سے میں خود ہوں اس لیئے وہ سلسلہ تو جب تک میں ہوں چلتا رہے گا 🙂

  23. اتنا اچھا لکھنے اور زبردست چوٹ لگانے پر میری طرف سے مبارک باد قبول فرمائیں.

  24. hijabeshab Said:

    عمران ، ضیاء الحسن اور زینب تبصرے کا شکریہ ۔۔

    عتیق علی ، شکریہ ۔۔

  25. حجاب شب صاحبہ :

    آپ نے زبردست لکھا ہے۔ ویسے آنٹی عبداللہ یہ سوچھتا ہوگا کہ

    بدنام اگر ہونگا تو کیا نام نہ ہوگا۔

    ویسے آج کل آپ نے بے کار پرزوں کے خلاف سخت اپریشن شروع کیا ہے ، جیسے آئی پی اشتھار اور یہ پوسٹ۔ ویسے میں ان اپریشنوں میں آپکے ساتھ سو فیصد متفق ہوں۔ گندے انڈوں کے ساتھ یہی عمل کرنا چاہئے۔

    بارہ سنگھا کا عنوان پرانا ہوچکا تھا، لھذا تبدیلی ضروری تھی۔ جو کہ آپ نے کردی۔

    وہ ایک شعر ہے نا ،
    بڑے بے ابرو ہوکر تیرے کوچے سے ہم نکلے۔۔۔

    بشرطہ کہ کسی کی ابرو ہو بھی تو۔

  26. Abdullah Said:

    ویسے مجھے تو آپ کے ساتھ نفسیاتی مسئلہ محسوس ہورہا ہے،

    • عابدہ عرف عبداللہ کاکی، کیسی ہو؟ پاگل خانہ سے کب واپسی ہوئی۔۔۔؟ بتایا بھی نہیں۔۔۔۔ آپ کے ذخم کیسے ہیں۔۔۔؟ بٹیا راجا، جانتا ہوں کہ تمہارے شوہر نے تمہاری خوب پٹائی کی ہے۔۔۔ لیکن پتر تیرے کرتوت بھی تو ایسے ہی ہیں۔۔۔ اب تو بلاگ در بلاگ جا کر اپنے زخم سہلاتی پھرتا ہے۔۔۔ تو غیرت مند شوہر کی غیرت تو جاگے گی۔۔۔ ویسے بھی میری مان۔۔۔ اپنے شوہر کا احسان مان کہ اس نے تیری جیسی بندے کو برداشت کر رکھا ہے اب تک۔۔۔ ہر چمکنے والی چیز سونا نہیں ہوتی۔۔۔ ایسے ہی تخیل میں پرواز کرنے والی ہر آنٹی، آنٹی نہیں ہوتی۔۔۔ انکل بھی ہو سکتا ہے۔۔۔ اس لیے پتر رانی۔۔۔ اپنی اوقات میں واپس آ میرے شہزادی بیٹا۔۔۔ اور شرم و حیا سےرہنا سیکھ ۔۔۔ در بدر پھرنا اچھے کھ٭٭٭ کے کام نہیں۔۔۔

      بٹیا راجہ۔۔۔ ایک شکایت اور ہمیں آپ سے۔۔۔ کہ آپ کی غیرت تب کہاں مر جاتی ہے جب آپ کے پیارے بھیا لوگ ہمارے مذہب، اللہ اور رسول کو طنز کر رہے تھے۔۔۔ تب آپ کہاں اپنا منہ چھپائے بیٹھے تھے۔۔۔ بیٹی عبداللہ، یہ کام منافقت کے زمرے میں ضرور آتے ہیں۔۔۔ دوسروں کو منافق کہتے تمہاری زبان نہیں تھکتی۔۔۔۔ لیکن جب تیر اپنے گھر سے نکلا تو زبان کہاں پھنسا لی تھی آپ نے۔۔۔

      ہمارے شیر جوان عابدہ۔۔۔ بیٹا کچھ مذہب کا نہیں تو اپنے معاشرے کا ہی خیال کر لو۔۔۔ کہ ہمارے معاشرے میں کھ٭٭٭٭ کو عزت کمانا پڑتی ہے۔۔۔ ایویں ملتی نہیں۔۔۔ اس لیے میرے ککڑ، کچھ ہوش کے ناخن لو۔۔۔ آنٹی کی پہنچ سے دور رہو۔۔۔ دھوبن کے کتے کی طرح دھوبن کے پاس نا پہنچ جایا کرو شکایت لگانے اور بڈھے ٹھرکی کی ٹھرک مت مٹاو۔۔۔

      تمہارا شب چنتک

  27. اور کہانی گوئی بھی بڑا فن ہے
    کم از کم گھر والے بہت خوش رہتے ہیں ایسے لوگوں سے جو خوب کہانیاں سناتے ہیں۔
    میری بھی یہی عادت ہے۔
    گھر والے اکثر کہتے ہیں کہ تمھآری بات میں سے کہانی نکال دے جائے تو پتہ چلتا ہے کہ تمھیں خود نہیں پتہ ہوتا کہ تم کہنے کیا آئے ہو
    😦

  28. hijabeshab Said:

    شکریہ درویش خراسانی 🙂

    عبداللہ ، کوئی بھی بات سوچ کے کی جائے تو معذرت کی ضرورت نہیں رہتی ، ہر نفسیاتی دوسرے کو نفسیاتی ہی سمجھتا ہے ۔۔۔ میں بلاوجہ کی باتوں کی معافی نہیں دیتی …

    • Abdullah Said:

      ایک منٹ ایک منٹ،اس ساری داستاں میں معذرت کہاں ہے زرا مجھے دکھائیں گی؟
      وہ تو مجھے آپ پر ترس آگیا تھا اس لیئے جاں بخشی کردی تھی،
      ورنہ نہ تو میں نے آپ سے معافی مانگی اور نہ ہی مجھے آپکی معافی کی ضرورت ہے،
      آپ بلا وجہ میں ہی معافیاں دے کر خو ش ہورہی ہیں!!!!!!!!

      • hijabeshab Said:

        یہ پوسٹ پچھلی پوسٹ سے تعلق رکھتی ہے آپ کا کیا گیا تبصرہ پیسٹ کردیا پڑھ لیں ۔۔۔
        Abdullah Said:
        on May 15, 2011 at 4:49 pm · Edit

        اور ہاں ایک اور اہم بات کسی زیادتی کا شکار شخص کی حمایت میں بولنے کے لیئے اس کی صنف سے ہونا ضروری نہیں ہوتا صرف ایک حساس انسان ہونا ضروری ہے۔۔۔۔۔۔۔!
        اوراسی حساسیت کے تحت میں اوپر لکھی دعا کے لیئے معذرت چاہتا ہون

  29. Abdullah Said:

    میری طرف سے آپ اس طرح کی فضول قسم کی ایک درجن پوسٹس لکھ ڈالیں سانو کی۔۔۔۔۔۔۔۔۔!

    • ZAINAB Said:

      khisyani billi khamba nochay

    • Abdullah Said:

      جی یہ میری حساسیت اورانسانیت تھی،
      جس کا جواب یہ پوسٹ لکھ کر دیا گیا،
      اور اب جب کہ آپ اپنا حساب برابر کر چکی ہیں،تو کسی معافی کا کوئی سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،

  30. ٤٢ تبصرے …بہت اعلیٰ حجاب …..تھوڑی سی اذیت تو ہوتی ہے اور تھوڑا سا غصّہ بھی اپنے آپ پر آتا ہے کہ یار میں کس چوہڑے چمار کےمنہ لگ رہا ہوں لیکن نو پین نو گین والی کہاوت تو ضرور سنی ہوگی آپنے…. ماشا الله بلاگ ترقی پر ہے ….اور اس بات پر مبارک ہو….ویسے یہ بات ماننا پڑے گی کہ آنٹی گروپ کو منہ توڑجواب دینے کا یہ فائدہ تو ہوتا ہے کہ بہت سارے لوگ میدان میں کود پڑتے ہیں اور سپورٹ کرتے ہیں…
    ایک مبارکباد اور ہے اور وہ یہ ہے کہ آپکی پوسٹ کا اثر آنٹی گروپ پر اتنا زیادہ پڑا ہے کہ وہاں سے بھی ایک جوابی پوسٹ آگئی ہے، آنٹی گروپ کے چوہڑا ان چیف کی مدد کے لئے….اور آپ سند یافتہ بیک ورڈ خاتون بن چکی ہیں… (: (: (:
    خبردار جو اس چمار کو معافی دینے کی بات کی …یہ اسے آپکی کمزوری سمجھے گا اور شدت سے حملے کرے گا .

  31. hijabeshab Said:

    ڈاکٹر جواد شکریہ ۔۔۔ مجھے اپنے دقیانوسی ہونے پر ناز ہے …

  32. بنیاد پرست Said:

    ویسے آپ کی عبداللہ کی متعلق لکھی گئی یہ کہانی حقیقت کے قریب تر لگتی ہے۔ یہ عورت نما مرد تب ہی ہر وقت مردوں کو کوستا رہتا ہے اور مختاراں مائی کی عورت کے متعلق لکھی گئی خود ساختہ ظلم کی کہانیوں پر بڈھے ٹھرکی کے ساتھ بیٹھ کر مگر مچھ کے آنسو بہاتا رہتا ہے۔

    کیسی قابل رحم زندگی ہے انکی۔ ۔ ۔آگے بھی مار پیچھے بھی مار۔ ۔ ۔

    ہور پیو سیگریٹ۔

  33. آنٹی کی جوابی پوسٹ پر تو آدھا سے زیادہ تبصرے آنٹی کے اپنے ہیں۔
    میں نے عرصے بعد آنٹی کو بلاگ کو اپنے مبارک قدموں سے پامال کیا لیکن وہی بکواس پڑھنے کو ملی ۔
    اس کا ھر جانہ کسے کیا جائے؟
    حجاب؟
    ڈاکٹر جواد؟

  34. اسکا ہرجانہ عبد الله سے لیا جائے اسے ڈھونڈا جائے اور پھر اسے تبلیغ میں لگا دیا جائے ساری زندگی کے لئے….اگر اس سے بھی تسّلی نہ ہو تو آنٹی کو پردہ کرایا جائے اور ان سے ہانڈی چولھا کرایا جائے اور انکا انٹر نیٹ کنکشن ختم کروا کر….خواتین ڈائجسٹ میں مشرقی لڑکی کی رومانوی کہانیاں لکھوائی جائیں….
    😆

  35. hijabeshab Said:

    بنیاد پرست ، بلاگ پر خوش آمدید ۔۔۔

    • Abdullah Said:

      لگتا ہے تم سب کے زخمون پر عنیقہ کا چھڑکا ہوا نمک اب تک تکلیف دے رہا ہے!!!
      🙂

  36. باجی عابدہ کی پوسٹیں اتنی ڈیمانڈنگ ہیں مجھے پتہ نہ تھا

  37. Shabih Fatima Pakistani Said:

    Yeh kya baat huee Hijab akhri paragraph kiyun hata diya main ne pehly open kiya tha tau parh na saki thee ab daikha tau ghayeb :S

  38. hijabeshab Said:

    ڈفر اب پتہ چل گیا ناں پتہ چلنے کی فیس دیں ۔۔

    شبیہہ تم کہاں غائب تھی ویسے آخری پیراگراف کوئی خاص نہیں تھا فیس بُک پر بتا دوں گی ۔۔

  39. Taheem Said:

    اچھا بلاگ ہے ایسے ہی شیئرینگ کرتے رہا کیجئے


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: