گرمی ، بجلی اور جھنجلاہٹ ۔۔۔۔۔۔۔

گرمی کے موسم میں صبح صبح دوپہر ہوجاتی ہے ۔۔۔۔ اور سورج شانِ بے نیازی سے چمکتا ہوا چرند پرند ، پھول پودے اور انسانوں پہ اپنی گرمی کا رعب جما رہا ہوتا ہے ۔۔۔۔ کوئی بھولا بھٹکا بادل کا ٹکڑا اگر سورج سے آنکھ مچولی کھیلنا چاہے تو بھی سورج لفٹ نہیں کراتا ۔۔۔۔ اور رہی میں ، تو کراچی کے حالات ، ہر وقت ناراض بجلی ، بجلی کی وجہ سے پانی کے نخرے ، ہر روز بڑھتی ہوئی مہنگائی کا اثر لوگوں پر اور لوگوں کے مزاج آسمان پر ہونے کی وجہ سے نو لفٹ کی عادی ہو چکی ہوں ، اور حساب برابر کیئے بغیر مزہ نہیں آتا تو ادھر بھی نولفٹ کا بورڈ ۔۔۔ یعنی جیسا کرو ویسا بھرو ۔۔۔۔
ساتھ ہی درجہ حرارت میں اضافے کے بجلی بھی ہر وقت آنکھ مچولی کھیلنے کے موڈ میں ہے ، یوں تو بجلی کا جانا روزمرّہ کے کاموں کی طرح معمول کا حصّہ بن چکا ہے مگر کوئی لمحہ ایسا ہوتا ہے جب غصّہ آ ہی جاتا ہے ۔۔۔۔ کل بھی یہی ہوا لائٹ گئی ہوئی تھی موبائل پہ ایف ایم ریڈیو آن کیا ، تحریکِ اعتماد کے حوالے سے پروگرام ہو رہا تھا کہ کس طرح عوام کو اعتماد میں لے کر سمجھایا جائے کہ موجودہ حالات کے خلاف نکل کھڑے ہوں اور قائد اعظم کے مزار پر جمع ہوکر ایک متحد قوم ہونے کا ثبوت دیں ۔۔۔۔ اچانک بیٹری ختم ہونے کا میسج آنے لگا ۔۔۔ گھڑی کی طرف دیکھا تو لائٹ آنے میں 5 منٹ باقی تھے ، سوچا 5 منٹ میں پروگرام ختم نہیں ہوگا لائٹ آئے تو سنوں گی کہ آگے کیا ہوتا ہے پروگرام میں ۔۔۔ مگر انتظار انتظار ہی رہا لائٹ مقررہ وقت سے 40 منٹ دیر سے آئی ۔۔۔
غصّہ تو تھا ہی ، گرمی کا احساس بھی ہونے لگا ۔۔۔ غصّے میں پہلی نظر جو اُٹھی ٹیڈی بیئر پر پڑی ۔۔۔۔ ویسے میں ٹیڈی بیئر سے نہیں کھیلتی 😛 سہیلی نے سالگرہ پر تحفہ دیا تھا تو سنبھال کے رکھ لیا ، اُس پہ نظر پڑتے ہی کچھ پریشان لگا وہ ۔۔۔ ساتھ ہنسی آگئی کہ کیا ہوگیا حجاب ٹیڈی بیئر اور پریشان 🙂 مگر پھر دوسری نظر ڈالی تو کچھ گندا گندا سا لگا ، کل اُس کا شاور ڈے ہے 😛
غصّہ کم ہوچکا تھا مگر جھنجلاہٹ باقی تھی ، کچن میں گئی برتن دھونا تھے ، ساری کپ غائب ۔۔۔۔۔۔ کپ دو ، کبھی تو چائے پی کے کپ کچن میں رکھ دیا کرو کہتی ہوئی کمرے میں گئی کہ کپ اکٹھے کروں ، کونے کُھدروں سے کپ برآمد ہوتے ہیں ہمارے ہاں ۔۔۔۔ ایک کپ کی کمی تھی کہا وہ بھی دو ، کہہ کے مڑی تو ٹی وی ٹرالی پہ ایک کپ چائے سے بھری نظر آئی ، میں نے کہا وہ کس نے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ابھی اتنا ہی کہا تھا کہ بھائی کے قہقہے کے ساتھ خود بھی شامل ہونا پڑا ۔۔۔۔۔۔۔ ٹی وی پہ چائے کا اشتہار تھا اور میں جب مڑی تو سفید چائے سے بھری کپ بالکل سامنے تھی مجھے لگا ٹی وی کے سامنے کسی نے کپ رکھ دی ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ قہقہے نے جھنجلاہٹ تو دور کردی ، مگر مجھے چڑانے اور تپانے کے لیئے اور کیا کیا کہا گیا وہ سب بتانے کی ضرورت کیا ہے 😳 ابھی تو گرمی کا آغاز ہے آگے دیکھتے ہیں گرمی اور بجلی مل کے کیا گُل کھلاتی ہیں ۔۔۔
نوٹ :- تبصرہ کرکے اپروو ہونے کا انتظار کریں ، کسی بھی جھگڑے سے دور رہنے کے باوجود مجھے بھی بیہودہ گالیوں سے نوازا جانے لگا ہے ، اس لیئے ماڈریشن آن کردی ہے ۔۔۔۔ بھونکنے والے شوق سے بھونکیں مجھے فرق نہیں پڑتا ۔۔۔ 🙄

Advertisements

31 تبصرے »

  1. گرمی ، لوڈ شیڈنگ ، جھنجھلاہٹ اور اوپر سے بلاگنگ پر یہ بیہوودگیاں… یہ کوئی ایک ہی نمونہ ہے جس نے بلاگستان میں بڑا گند پھیلایا ہوا ہے. ایک مچھلی پورے تالاب کوکس طرح گندا کرتی ہے کوئی یہاں آکر دیکھہ لے.

  2. ہمارے ہاں جاپان میں ابھی بھی سردی ہے۔۔۔۔۔
    اس سال تو بہار کا انتظار بھی نہیں کیا۔
    ماڈریشن لگا کر بہت اچھا کیا۔ میں نے بہت پہلے کہہ دیا تھا۔
    مخصوص شخصیت یا مخصوس جماعت سے اختلاف کرنے پر گالیاں وصولنی پڑھتی ہیں۔

  3. ہیں ۔۔۔۔۔ گرمی میں یہ کب بھلا سے ٹی وی میں گھسنے لگے۔ 🙂 اسکا مطلب یہ ہے کہ ابھی ہسپتال کا آپ کی طبعیت پہ اثر ہے؟۔

    ڈاکٹر صاحب نے بجا فرمایا آجکل کوئی زہنی مریض یہ غلیظ حرکت کر کے خوش ہوتا پھر رہا ہے۔ آپ لوگ اس کا آئی پی ایڈریس چیک کریں۔ اور شئر کریں۔

    بہر حال آپکی تحریر میں "گرمی کے موسم میں صبح صبح دوپہر ہوجاتی ہے ” یہ جملی کلاسیکی کا درجہ اختیار کر گیا ہے۔ آپ نے کراچی کے موسم کو خوب بیان کیا ہے۔ لاجواب۔

  4. Jafar Said:

    جو چائے پیے، وہ اپنا کپ خود دھوئے
    پانی کی اس قلت کا راز بھی سمجھ میں آگیا ہے کہ ٹیڈی بئیر بھی شاور لیتے ہیں
    پانی کی قلت کے خلاف اگلے مظاہرے میں آپ کے خلاف نعرے لگیں گے
    انشاءاللہ۔۔
    اور جی، کوئی گر ہمیں بھی سکھائیں،کہ چڑچڑے موضوعات سے شگفتگی کیسے کشیدتے ہیں۔۔

  5. روز مرہ زندگی کے عام واقعات اور کیفیات کو اتنی خوبصورتی سے بیان کرنا کہ پڑھنے والا خود کو اسی ماحول کا حصہ محسوس کرتا جائے یہ ہمیشہ سے بڑے لکھنے والوں کا خاصہ رہا ہے۔

  6. hijabeshab Said:

    ڈاکٹر جواد ، وہ جو کوئی بھی ہے بلاوجہ مجھے گالیاں لکھ کے یہ بتا گیا ہے کہ وہ خود کیا ہے ، ایسے لوگ نفسیاتی مریض ہوتے ہیں ۔۔

    یاسر ، میں نے تو کسی سے اختلاف نہیں کیا ۔۔۔ یہاں تک کے مجھے بلاوجہ گھیسٹے جانے پر بھی چپ رہی ،اور یہ بھی پڑھا کہ میرے حمایتی بول رہے ہیں شائد مجھے بولنا نہیں آتا ۔۔۔

    جاوید گوندل صاحب ، اللہ کا شکر ہے اب میں بلکل ٹھیک ہوں ، بس جھنجلاہٹ اکثر ایسے کارنامے کر جاتی ہے کہ ٹی وی کے اشتہار کا کپ سامنے نظر آنے لگتا ہے 🙂 تحریر پسند کرنے کا شکریہ ۔۔
    آئی پی چیک کی ہے میں نے اگر سب لوگ شیئر کریں تو میں بھی پوسٹ کردوں گی ۔۔۔

    جعفر ، ٹیڈی بیئر کو بھی گرمی لگتی ہے ناں بیچارہ پریشان تھا 😛 چڑچڑے موضوعات سے نمٹنے کے لیئے سادہ سی پوسٹ کی جگہ کڑھائی والی پوسٹ لکھنی پڑے گی 🙂

    شکریہ احمد عرفان شفقت ، میرے انداز کے ساتھ آپ کا حسنِ نظر بھی ہے 🙂

    مسٹر ساقی ، آپ کا تبصرہ اپروو نہیں ہوسکتا ۔۔ آپ نے عثمان کے لیئے جو بھی لکھا ہے عثمان کے بلاگ پر جا کے لکھیں ۔۔۔ اب ایسا کوئی تبصرہ آیا تو آپ کا پی ٹی سی ایل نمبر شیئر کردوں گی جو آپ کی آئی پی کے ساتھ موجود ہے ۔۔۔

  7. میں آپ کے بلاگ کو صرف اسی لیۓ پڑهتا هوں که آپ کا انداز بهت اچھا هے. باقی هم لوگ جب اختلاف برداشت کرنے کےقابل هو جائیں گے تو گالی بند هو جاۓ گی. فی الحال گزاره کریں اور دعا کریں که تعلیم همارے ذهنوں کا کچھ بگاڑ لے…

  8. hijabeshab Said:

    بہت شکریہ عتیق علی ۔۔

  9. شازل Said:

    خوب لکھا ہے
    آپ نے میرے خیال میں کبھی کسی تنازعے میں حصہ نہیں لیا
    خیر ایسا ہوجاتا ہے

  10. ویسے تو یہ اصول کے کیخلاف ہے ماڈریشن لگے بلاگ پے کمنٹ کرنا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مگر اس بلاگنگ سوئمنگ پول میں اب پانی کچھ زیادہ ہی اپر چلا گیا ہے اس لئے خواتین تو کم سے کم ضرور ماڈریشن آن رکھیں ۔۔۔۔۔۔ صرف خواتین

    باقی آپکی پوسٹ کے بارے میں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    کہانی گھر گھر کی ۔۔۔۔۔۔۔ لائٹ کی اور چائے کے مگ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جائے نماز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شوز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    کارڈ لیس ٹیلی فون ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ لگتا ہے ان سب باتوں میں ہر گھر میں بہن بھایئوں میں جنگ ہی ہوتی ہے مگر مجال ہے کہ بھائی برداری ٹس سے مس ہوجائے ““ بھائی““ جو ہوئے ۔۔۔۔۔ اور ہاں مجھے اپنے گھر کا فون نمبر یاد نہیں ایس ٹی سی کا ۔۔۔۔۔۔ 🙂

  11. ديکھيئے بی بی ۔ آپ کے لکھنے کا انداز ماشاء اللہ دلچسپ ہے ۔ بجلی کم آتی ہے مگر بل زيادہ آتا ہے ۔ اس کے ساتھ ساتھ ہر سال 8000 روپے خرچ کر کے يو پی ايس کيلئے نئی بيٹری ۔ بچپن ميں ريڈيو سے ايک گانا سنا تھا جو ابھی تک ياد ہے ۔ يہ گانا آپ کے والدين نے بھی اپنے بچپن ميں سنا ہو گا

    چاہے کوئی خوش ہو چاہے گالياں ہزار دے
    مست رام بن کے زندگی کے دن گذار دے

  12. عثمان Said:

    میں تو جی آپ کی غصیلی پوسٹ پڑھ کر ہی کانپ گیا۔ دو دن سے تبصرہ کرنے کی ہمت ہی نہیں ہوئی۔ 😦

    اور مہربان تبصرہ نگار سے عرض ہے کہ وہ میرے بلاگ کی بجائے کچھ دوسرے مہربان بلاگز کا رخ کرے جن کے تبصروں اور تحاریر کا موضوع ہی میں اور استانی محترم ہیں۔ خوب جمے گی جب مل بیٹھیں گے یہ مہربان سب! 😛

    • کون ہے جو قبلہ عثمان صاحب کینیڈا والے سے گستاخی کی جرت کر رہا ہے؟

      • hijabeshab Said:

        عثمان کے چاہنے والے بہت ہیں اُن میں سے کوئی ہوگا ۔۔۔

      • جی ہاں سب سے بڑھ کر تو میں خود ہوں …کبھی کبھی میرا دل چاہتا ہے کہ میں رات سوؤں اور جب صبح اٹھوں تو عثمان ہو جاؤں مگر کیا کروں عثمان صاحب کے خواتین کے معاملے میں خشوع اور خضوع سے ڈر لگتا ہے …

  13. حجاب۔۔۔ پہلے تو آپ نے ماڈریشن لگا کر اچھا کیا ہے۔۔۔ ماحول بہت خراب ہو گیا ہے آج کل۔۔۔ اور ہر جگہ کی طرح بلاگستان کا بھی۔۔۔ کچھ گندی بھیڑیں گھس آئیں ہیں۔۔۔۔

    دوسرا۔۔۔ جھنجلاہٹ کے بعد کی جو ہنسی ہے وہ بڑی قیمتی ہوتی ہے۔۔۔۔۔ اسے ایسے ہی برقرار رکھیں۔۔۔ گرمی تو کم نہیں ہوگی۔۔۔ نا بجلی چوبیس گھنٹے رہے گی۔۔۔ بس اپنے ہنسنے مسکرانے سے ہی گھر کا ماحول خوشگوار رکھیں۔۔۔ امید ہے کہ آپ مسکرانی اچھی لگتی ہیں۔۔۔

  14. hijabeshab Said:

    شکریہ شازل ۔۔۔

    ضیاء الحسن ، مجھے خود ماڈریشن نہیں پسند ، دیکھیں کب تک لگا کے رکھتی ہوں ۔۔ آپ کی آئی پی چیک کرتی ہوں اگر اُس میں آپ کا فون نمبر ملا تو لکھوں گی یاد کرلیجئے گا 😛

    شکریہ اجمل انکل ، یو پی ایس پر سالانہ اتنا خرچ کرنے سے بہتر جنریٹر نہ لے لیا جائے ؟؟ پتہ نہیں سستا پڑے گا یا مہنگا ۔۔۔ ویسے گیس جنریٹر ٹھیک رہتا ہے ۔۔

    عثمان ، حیرت ہے آپ کو میری پوسٹ کا معمولی غصّہ کپکپا گیا جب کہ شاگرد آپ غصّہ ور استانی کے ہیں 😛 اور جو تبصرہ میں نے اپروو نہیں کیا اُس میں صرف آپ کا ذکر تھا وہ بھی میری پوسٹ انکھیوں ہی انکھیوں میں آپ کے تبصرے کے حوالے سے ۔۔۔ آپ نے اپنی استانی صاحبہ کا ذکر غیر ضروری کردیا یہاں 🙂

  15. چائے کی پیالیوں والی بات اپنے خوب کی۔۔
    میرے کمرے میں بھی پیالیوں کاڈھیر لگ جاتا ہے۔
    اور جب گھر میں کہیں پیالیاں نہیں ملتیں میرے ہی کمرے کا رخ کیا جاتا ہے۔۔
    حالانکہ اتنی بار کہا بھی ہے کہ میرے چائے ختم کرتے ہی پیالی اٹھا لیا کریں
    مجھے بھی گالیاں ملتی رہتی ہیں بنا کسی لڑائی جگڑے کے اور بنا کسی جانبداری کے تو اس معاملے میں

    "ہم پہ ہیں مشترک احسان غم الفت کے "

  16. hijabeshab Said:

    شکریہ عمران ۔۔۔

    امتیاز ، اُٹھا لیا کریں پیالیاں، خود جا کے کچن میں نہیں رکھنی واہ جی ۔۔۔۔۔ ہر جگہ ایک حال ہے سب کا 🙂

  17. Abdullah Said:

    ویسے آپ صرف دھمکیاں نہ دیں ایسے خبیثوں کا پی ٹی سی ایل اور آئی پی ایڈریس فورا طشت از بام کریں تاکہ دوسروں کو بھی عبرت ہو،
    حالانکہ یہ اتنے مکار ہیں کہ مجھے یقین ہے انکی یہ معلومات بھی دو نمبری ہوں گی!
    کچھ ذہنی اور نفسیاتی مریض ایسی ہی دوہری شخصیات کے مالک ہوتے ہیں باہر کچھ اندر کچھ۔۔۔۔۔۔۔!

  18. hijabeshab Said:

    عبداللہ ، ڈاکٹر جواد کا یہ تبصرہ میری پوسٹ کا تو نہیں ہے ، پھر اس کو یہاں لکھ کے بلاوجہ بات بڑھا کے فساد ری اوپن ہی مطلب ہوا ناں ؟؟ نہ ہی ڈاکٹر جواد نے آپ کا نام لکھا ہے تو پھر آپ نے کیسے سمجھا کہ آپ کو کہا گیا ہے ؟؟ آپ نے خود سے سمجھ کے ، اُس کے بعد جو تبصرہ لکھا خود اپنی بات کی نفی کردی آپ نے ۔۔۔ اور میں صرف دھمکی نہیں دیتی تنگ کرنے کے طریقے مجھے بھی آتے ہیں ۔۔

    • Abdullah Said:

      ارے نہیں بھئی میں تو ہرگز یہ نہیں سمجھا تھا کہ مجھے کہا جارہا ہے ،
      اور آپ بلاوجہ چور کی داڑھی میں تنکا تلاش نہ کریں یہاں تو چور پوری پوری جھاڑو داڑھی میں چھپائے پھرتے ہیں مگر ہم صرف اس لیئے انہیں اگنور کر دیتے ہیں کہ وہ ہمارے ہم خیال ہوتے ہیں !
      کیوں ٹھیک کہا نا میں نے!!!!
      🙂

  19. چور کی داڑھی میں تنکا ہوتا ہے حجاب۔۔۔

    جہاں کوئی منفی بات ہو رہی ہو۔۔۔ سمجھ لیں۔۔۔ اس بات میں عبداللہ کا عمل دخل کافی ہے۔۔۔ بے چارے کو ہر بات خود پر لینے کی عادت ہے۔۔۔

  20. شکریہ حجاب !
    میں جو اسکے بارے میں جو کچھ کہنا تھا اپنے بلاگ پر کہ چکا ہوں اور نہیں چاہتا کہ آپکے بلاگ پر امن و امان کا ماحول خراب ہو اس لئے میں یہاں اسکی کسی بات کا جواب نہیں دونگا.

  21. hijabeshab Said:

    بلاوجہ بات بڑھانے کی ضرورت نہیں ہے عمران ، عبداللہ نے آپ کا ذکر نہیں کیا تھا ۔۔۔ کوئی کسی سے کم نہیں ہے بلاگستان میں اور بات اسی طرح بڑھتی ہے 🙄

  22. hijabeshab Said:

    عبداللہ ، اگر آپ نے یہ نہیں سمجھا کہ آپ کو کہا گیا ۔۔۔ پھر جو بات میری پوسٹ کے تبصرے میں نہیں تھی اس کو لکھ کے آپ نے تقریر کیوں کی ؟؟؟ آپ نے جس طرح لکھا کہ آپ اپنی بھڑاس نکال لیتے ہیں کسی کا کیا جاتا ہے ۔۔۔ اسی طرح آپ بھی یہ سمجھ لیں کہ دوسرے بھی اپنی بھڑاس نکال لیتے ہیں پھر آپ کا کیا جاتا ہے ؟؟ ہر کسی کو اپنی بات کہنے کا حق حاصل ہے کہ نہیں ۔۔۔
    اور چور کی داڑھی میں تنکا تو میں نے تلاش نہیں کیا یہ بات کسی اور نے لکھی ہے اب آپ مجھے مخاطب کرکے چپکے سے بندوق کا نشانہ دوسری طرف مت کریں اچھا 🙂
    اور اگنور تو آپ نے میری بات کو بھی کردیا ہے اس لیئے میں بھی نہیں بتا سکتی کہ آپ نے ٹھیک کہا یا غلط 😛

    • Abdullah Said:

      یہ بھڑاس والا جملہ ان بیڈ مین صاحب کا ہی تھا ،
      میرا تبصرہ تو یہاں سے شروع ہوتا ہے کہ ،
      ویسے آپ صرف دھمکیاں نہ دیں،ایسے خبیثوں کا پی ٹی سی ایل اور آئی پی ایڈریس فورا طشت از بام کریں۔۔۔۔۔۔۔۔۔!

  23. hijabeshab Said:

    عبداللہ ، مجھے صرف یہ پتہ ہے کہ بھڑاس والی بات میری پوسٹ کے تبصرے میں کسی نے نہیں لکھی ، آپ نے اُس بات کو یہاں کیوں لکھا اس کی وجہ آپ نے اب بھی نہیں بتائی ، اس لیئے جہاں سے آپ کا تبصرہ شروع ہے اس سے پہلے کا تبصرہ میں ایڈیٹ کر رہی ہوں ۔۔۔ آپ وجہ بتا دیتے تو کبھی ایڈیٹ نہیں کرتی ۔۔۔ کس نے کہاں کیا لکھا ہے اگر وہ میری پوسٹ سے مطابقت نہیں رکھتا تو لکھنا بے معنی ہے ۔۔

    • Abdullah Said:

      🙂

      • hijabeshab Said:

        آپ کے تبصرے جو میری پوسٹ کے حوالے سے ہونگے اُس کے لیئے آپ کو ہمیشہ خوش آمدید 🙂


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: