یومِ خواتین ۔۔

اگر بزمِ ہستی میں عورت نہ ہوتی
خیالوں کی رنگین جنت نہ ہوتی
ستاروں کے دلکش فسانے نہ ہوتے
بہاروں کی نازک حقیقت نہ ہوتی
جبینوں پہ نورِ مسرت نہ کھلتا
نگاہوں میں شانِ مروّت نہ ہوتی
گھٹاؤں کی آمد کو ساون ترستے
فضاؤں میں بہکی بغاوت نہ ہوتی
فقیروں کو عرفانِ ہستی نہ ہوتا
عطا زاہدوں کو عبادت نہ ہوتی
مسافر سدا منزلوں پر بھٹکتے
سفینوں کو ساحل کی قربت نہ ہوتی
ہر اِک پھول کا رنگ پھیکا سا رہتا
نسمِ بہاراں میں نکہت نہ ہوتی
خدائی کا انصاف خاموش رہتا
سنا ہے کسی کی شفاعت نہ ہوتی ۔۔ ( ساغر صدیقی )

Advertisements

15 تبصرے »

  1. sania rehman Butt Said:

    بہت عمدہ !!!

    شئرنگ کا بہت شکریہ

  2. کتنی پر سکوں یہ دنیا ہوتی
    نہ بہنوں کے لاڈلے نخرے ہوتے
    نہ بیوی نخرے ہوتے
    نہ اماں جی کے احکامات ہوتے۔
    کتنی پر سکوں دنیا ہوتی

  3. hijabeshab Said:

    شکریہ ثانیہ ۔۔

    یاسر ، کبھی سکون نہ ہوتا اگر ۔۔ یہ سب نہ ہوتا 🙂 یومِ خواتین پہ سارا کام کیجیئے گا گھر کا اور خاتون کے حکم کی پیروی 😛

  4. وسیم Said:

    گھروں میں بے سکونی نفرت حسد اور ماحول میں تناؤ نہ ہوتا

  5. درویش شاعر کے نہایت عمدہ اشعار درج کیے آپ نے۔ اپنی ماں، بہن، بیوی اور بیٹی کے حوالے سے میرے لیے ہر یوم یومِ خواتین ہونا چاہیے۔ بہر حال مغرب کے ایجاد کردہ یوم خواتین پر مشرق کے عظیم شاعر کے چند اشعار بھی حاضر ہیں۔ شاید ان سے بڑھ کر کسی شاعر یا فن کار نے عورت کی تعریف نہیں کی۔
    وجود زن سے ہے تصویرِ کائنات میں رنگ
    اسی کے ساز سے ہے زندگی کا سوزِ دُروں
    شرف میں بڑھ کے ثریا سے مشتِ خاک اِس کی
    کہ ہر شرف ہے اِسی دُرج کادُرِ مکنوں
    مکالماتِ فلاطوں نہ لکھ سکی لیکن
    اسی کے سوز سے پھُوٹا شرارِ‌افلاطوں
    "حکیم الامت علامہ محمد اقبال”

  6. ميں صرف ايک فقرہ ميں بات ختم کرتا ہوں اور وہ ہے
    "اگر عورت نہ ہوتی تو يہ دنيا ہی نہ ہوتی” باقی اللہ کی مرضی

    اب تنقيد
    يہ ساغر صديقی صاحب شاعری ميں پھنس کر رہ گئے اور عورت کے حُسن کو اُجاگر نہ کر سکے ۔ عورت نہ ہوتی تو :-
    بچہ کسی کی گود ميں سکون پاتا
    دن بھر کا تھکا ہارا مزدور کسے ديکھ کر اپنی تھکاوٹ بھول جاتا
    بھائی کسے بہن کہہ کر فخر کرتا
    باپ کس بيٹی کی مسکراہٹ ديکھ کر اپنے غم بھول جاتا

  7. بس ایک کو ہی ہر قدم ساتھ رکھلیں اور برداشت کرکے دکھا ديں نا تو ان شاعر صاحب کی بتائی ہوئی ساری مصیبتوں اور بلاؤں سے نجات مل جائے گی ۔

  8. اگر یہ سب نا ہوتا تو کیا ہوتا یعنی کچھ بھی نا ہوتا ،،،

  9. Darvesh Khurasani Said:

    اچھی شاعری کی ہے ۔واقعی اگر عورت نہ ہوتہ تو کچھ بھی نہ ہوات۔

  10. مجھے بس ایک بات کی سمجھ نہیں آتی۔۔۔ جب حقوقِ نسواں کی بات ہوتی ہے تو وہاں حقوقِ مرداں کو کیوں بھولا دیا جاتا ہے۔۔۔ 🙂

    ویسے سب اچھی خواتین کو ان کا عالمی دن مبارک ہو۔۔۔

  11. سب اچھی خواتین کو ان کا عالمی دن مبارک ہو۔۔۔
    بہت عمدہ بات ہے

  12. hijabeshab Said:

    یاسر ، ہر روز یومِ خواتین ہو واہ 🙂

    وسیم ، صرف منفی پہلو لکھا آپ نے کچھ مثبت بھی تو ہوسکتا ہے ۔۔

    غلام مرتضیٰ علی بلاگ پر خوش آمدید اتنی اچھی شاعری شیئر کرنے کا شکریہ ۔۔

    عورت کی اتنی ساری خوبیاں لکھنے کا شکریہ اجمل انکل ۔۔

    جاہل سنکی ، کس ایک کو ساتھ رکھوں ؟؟

    شاہدہ آپی ، جی کچھ نہ ہوتا ۔۔

    بلاگ پر خوش آمدید درویش خراسانی اور شکریہ ۔۔

    عمران ، مردوں کا کام صرف یومِ خواتین منانا اور خواتین کو منانا 🙂

    شکریہ ڈاکٹر جواد ۔۔

  13. qasim Said:

    اگر عورت نہ ہوتی تو يہ دنيا ہی نہ ہوتی
    گویا مرد صرف گھاس کھودنے کیلئے پیدا کیا گیا، یہ کیسا رویہ ہے کہ ایک ہہلو کی ضرورت بتاتے بتاتے دوسرے پہلو کو سرے ہی سے نظر انداز کردیا جائے، کیا عورت مرد میں سے کسی ایک کی بھی ضرورت کا انکار کیا جاسکتا ہے

  14. hijabeshab Said:

    بلاگ پر خوش آمدید قاسم ، اس پوسٹ میں مرد کے خلاف کوئی بات نہیں کی گئی نہ یہ لکھا گیا کہ مرد غیر ضروری ہے ۔۔ میں نے صرف اپنی صنف کی تعریف کی ہے 🙂


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: