انداز !!! محبت کے ۔۔۔

زمانہ چاہے پرانا ہو یا نیا ، ہر چیز اور انداز میں تبدیلی لاتا ہے ۔۔ محبت کے انداز بھی اب وہ نہیں رہے جو پرانے زمانے میں ہوا کرتے تھے ۔۔ پہلے جھجک ، معصومیت تھی ۔۔ شرمائی سی ، نظریں چراتی آنچل کا کونا مروڑتی محبوبہ جس کو دیکھنے کے لیئے محبوب ہزار جتن کرتا تھا ۔۔۔ اور ایک جھلک سراپا مجسّم یا ہاتھ پیر پر نظر پڑنے کو ہی کافی سمجھ کے خوش رنگ خوابوں میں کھو کر یہ سوچتا تھا کہ پھر کب آئے گا وہ دن جب دیدار ہوگا ۔۔۔ سادہ سی محبوبہ پراندے اور کانچ کی چوڑیوں سے خوش ہو جایا کرتی تھی ۔۔۔ اس زمانے میں اگر ریڈ روز ڈے منایا جاتا تو شائد یوں ہوتا کہ بڑی مشکل سے محبوبہ کے گھر پہنچا جاتا ۔۔۔ پورے گھر والوں سے علیک سلیک کے بعد (پہلے کزن ہی محبوب ہوتے تھے زیادہ ) بیٹھنے کے لیئے ایسی جگہ منتخب کی جاتی جہاں سے اُن پہ نظر ہو اور کانوں میں آواز بھی جائے ۔۔ پھر ہمت جمع کرکے محبوبہ کے بھائی سے کہا جاتا !!! منّے دیکھو گلاب کا پودا کتنا اچھا لگ رہا ہے ۔۔ اپنی باجی سے کہو وہ گلاب اُن کے لیئے ہے 😛
پرانا وقت ذرا آگے بڑھا اس وقت بھی محبت کرنے والے گھر اور زمانے کی نظروں سے بچ بچا کے محبت کی پینگیں بڑھایا کرتے تھے ۔۔۔ آہیں بھرنا منظور ۔۔۔ مگر محبوب کی رسوائی گوارہ نہیں تھی ۔۔۔
آج کل کی محبت بیہودگی ، بے باکی ، خباثت اور جھوٹ کے سوا کچھ نہیں ۔۔۔ شرم سے عاری محبوبہ کا آنچل غائب ۔۔۔ محبوب کے حوصلے جواں ۔۔۔ ہر لڑکا عمران ہاشمی کا جانشین بننے کو تیار ۔۔۔ ( ایسے لڑکوں کا منہ سِل پر رکھ کے بٹّے سے کوٹ دینا بہتر ) ہر وقت ملاقات اور جپّھی کے لیئے بیقرار ۔۔۔ لڑکی کرے انکار تو اس کو بائے بائے ، کسی اور حسین چہرے کو ہائے ہائے ۔۔۔ ویلینٹائن ڈے پر سرخ گلاب کے ساتھ ہر گُل کھلانے کو تیار ۔۔۔
محبت میں اظہار ، محبوب کو اپنا بنا لینے کی خواہش اپنی جگہ ۔۔۔ مگر محبت میں بے باکی اچھی نہیں لگتی ۔۔۔ سب کچھ کہہ کے کچھ نہ کہنے کا انداز برا نہیں ہوتا اگر کہنا آتا ہو ۔۔۔ مگر کیا کیا جائے جب محبت جیسا حسین مرض لاحق ہو ۔۔ نظروں کو محبوب کے سوا کوئی اور جلوہ دکھائی نہ دے ۔۔۔ یو فون کہے “ تم ہی تو ہو“ زونگ والے کہیں “ سب کہہ دو “ عشق کی آگ کو زمانہ ہوا دے رہا ہو تو بیچارہ عاشق کرے تو کیا کرے ۔۔۔ قصور ظالم زمانے کا الزام محبت پر ۔۔۔

Advertisements

26 تبصرے »

  1. بالی وڈ کی فلموں کے رنگ بھی اسی رفتار سے بدلے ہیں۔ 🙂

  2. Shabih Fatima Said:

    Wah Hijab BUhat khoob 😀

  3. حجاب۔۔۔ محبتییں بہلے زمانے کی ہی اچھی تھیں۔۔۔ اب محبتیں کہاں رہیں۔۔۔ ہوس کا کھیل بن گئیں ہیں۔۔۔ ویسے کیا آپ بھی محبت کے عالمی دن پر یقین رکھتی ہیں۔۔۔ یا۔۔۔ سال کے سارے دن ہی محبت کے دن ہوتے ہیں۔۔۔؟

  4. […] This post was mentioned on Twitter by UrduFeed, Urdublogz.com. Urdublogz.com said: UrduBlogz.com -: انداز !!! محبت کے ۔۔۔ http://bit.ly/ibjHYO […]

  5. Asma Said:

    achi khasi class kar di aj kal ko muhabaat ki zaberdast… 😀

  6. عثمان Said:

    پوسٹ تو بڑی شاندار ہے لیکن آپ نے دھمکیاں کچھ ذیادہ ہی دے ڈالی ہیں۔ 😦

  7. سادہ سی محبوبہ پراندے اور کانچ کی چوڑیوں سے خوش ہو جایا کرتی تھی ۔۔

    @ بی بی!
    اگر آپ برا نہ منائیں تو کیا پوچھ سکتا ہوں کہ کیا آپ اسٹون ایج کیا بات کر رہی ہیں کیا؟ کیونکہ آجکل کے انداز تو یہ ناشندہی کرتے ہیں کہ چوڑی، پراندے۔ لال دننداسہ، مہندی یہ سب اسٹون ایج میں ہوتا ہوگا۔یا پھر پاکستان میں بسنے والے گولی کی رفتار سے چل رہے ہیں جو ایک ہی چھلانگ میں صدیاں پھلانگتے جارہے ہیں۔

    ہم لوگ ہر برے یا نکمے کام میں جدت پسند کیوں ہیں؟

  8. جب کرنے کو کوئی کام نہ بچے تو محبتوں کی باری آجاتی ۔ کس سے کریں، کیسے کریں کہ دنیا یاد رکھے اور فالو کرتی نظر آئیا کرے ۔

  9. Jafar Said:

    پہلی بات تو یہ ہے کہ جی اس چیز کو محبت کا نام دینا ہی غلط ہے
    اسے زیادہ سے زیادہ ضرورت کہہ سکتے ہیں
    ضرورت پوری کرنے کے طریقے مختلف رہے ہیں ہر دور میں
    محبت کچھ چیزے دگر ہوتی ہے۔۔۔!

  10. Aniqa Naz Said:

    پیغام محبت عام تو ہے عرفان محبت عام نہیں۔ جو چیزیں آپ نے گنوائ ہیں یہ جذبات کے اظہار کا طریقہ ہو سکتے ہیں محبت نہیں۔ ہر زمانے میں اپنے ماحول اور میسر چیزوں کے ساتھ اظہار کے طریقے اپنائے جاتے رہے۔ جہاں بال ہی نہ ہوں وہاں پراندے کا کیا تذکرہ۔
    ہوس، بے باکی اور خباثت، یہ بھی ہر زمانے میں موجود رہے ورنہ قابیل کو ہابیل کو قتل کرنے کی ضرورت کیوں ہوتی۔ ہر زمانہ اپنے ماحول کا عکاس ہوتا ہے۔ بنیادی احساسات انسانی کبھی تبدیل نہیں ہوتے۔

  11. واقعی اس کومحبت کانام تونہیں دےسکتےہیں۔ لیکن اس چیزکوہم نےہی اتناعام کردیاہےکہ اب توچھوٹےچھوٹےبچےبھی جب تک اپنی محبوبہ کوپھول تحفہ نہ دےدیں توکہتےہیں محبت نہیں ہےحالانکہ محبت توایساجذبہ ہےجوکہ خاموش بھی ہولیکن اس کی آنچ سےدوسرےکوپتہ چل جائےکہ وہ اس سےمحبت کرتاہے۔

  12. آج کل کی محبت بیہودگی ، بے باکی ، خباثت اور جھوٹ کے سوا کچھ نہیں ۔۔۔ شرم سے عاری محبوبہ کا آنچل غائب ۔۔۔ محبوب کے حوصلے جواں ۔۔۔ ہر لڑکا عمران ہاشمی کا جانشین بننے کو تیار ۔۔۔ ( ایسے لڑکوں کا منہ سِل پر رکھ کے بٹّے سے کوٹ دینا بہتر )
    🙂 🙂 :)….
    یہ” استعمال کریں اور پھینک دیں ” والی تہذیب ہے.فوڈ کی طرح ہر چیز فاسٹ ہو گئی ہے. روز مرہ کی اشیا سے لیکر رشتے ناطوں تک ….اور یہ چیزیں خود بخود نہیں آرہیں بلکے میڈیا کی ذریعے انہیں پروان چڑھایا جا رہا ہیں آج کے مارننگ شوز دیکھیئے ایسا لگتا ہے valentine day ماننا کوئی حکم خداوندی ہے…سارے چھچھورے اور چھچوریاں صبح سے ٹی وی چینلوں پر پاگل ہوے جارہے ہیں. ایک طوفان بدتمیزی ہے ..

  13. Adnan Shahid Said:

    I am agree with u

  14. hijabeshab Said:

    سعود بھیّا ۔۔۔ 🙂

    بلاگ پر خوش آمدید شبیہہ فاطمہ اور شکریہ ۔۔

    عمران ، محبت کے لیئے کوئی دن مقرر تو نہیں ہوتا ۔۔ مگر آج کے دن کوئی چھوٹا سا تحفہ یا پھول دینے میں حرج بھی نہیں ۔۔

    بلاگ پر خوش آمدید اسماء ، اور شکریہ ۔۔

    پوسٹ کی پسندیدگی کے لیئے شکریہ عثمان ۔۔ اور جو ڈر گیا وہ مرگیا 😛

    جاوید گوندل صاحب ، برا ماننے کی کیا بات بھلا ، پتھر کے زمانے کا تو نہیں پتہ ۔۔ مگر آج کے زمانے میں بھی چوڑی ، پراندہ ، مہندی اِن ہے ذرا سی تبدیلی کے ساتھ ۔۔۔ اور ہیں ایسی بہت سی لڑکیاں بھی جو اس طرح کے تحفے سے خوش بھی ہو جاتی ہیں ۔۔۔ ہر برا کام نئے زمانے کا ہے اس لیئے مزید ترقی کے امکانات بھی روشن ہیں ۔۔۔

    جاہل سنکی ۔۔ پھر آپ نے تجربہ کیا کیا ؟؟؟

    جعفر ، ٹھیک جناب 🙂

    انیقہ ، آج کل بال شولڈر کٹ ہوں تو بھی پراندہ جھول رہا ہوتا ہے ۔۔۔

    جاوید اقبال ، ٹھیک لکھا آپ نے مگر آج کل یہی حال ہے کیا کیا جائے ۔۔

    ڈاکٹر جواد ، میڈیا اُکسا رہا ہے اور الزام معصوم نوجوانوں پر ہے نا ظلم 🙂

    عدنان شاہد بلاگ پر خوش آمدید اور شکریہ ۔۔

  15. ہم نے تو جی کسی کے بھی کسی بھی تجربے کا مزاق ہی اڑتے دیکھا ہے ۔ ہم تو جی اسیلئے یاد ہی نہیں رکھتے کے کونسے والا کام کس طریقے سے کیا تھا ۔

  16. آپکی اپنی سوچ ہے۔۔۔ کم از کم میرا تجربہ مختلف ہی ہے۔۔۔ میں مانتا ہوں کہ حالات انیس سو ساٹھ والے نہیں رہے۔۔۔ لیکن۔۔۔ پھر بھی۔۔۔ اچھے لوگ موجود ہیں۔۔۔ ساری دنیا حسین چہروں کو دیکھ کے شرمیلی محبوبہ کو بائے بائے نہیں کہہ دیتی۔۔۔ آج بھی لوگ سالہاسال جدائیاں برداشت کرتے ہیں، ماریں کھاتے ہیں، لیکن پھر بھی ساتھ نبھاتے ہیں۔۔۔ پاک محبت نایاب ہو ہے، ناپید بہرحال نہیں۔۔۔

  17. بہت خوں، میں نے بھی اسی موضوع پر کچھ لکھا ہے

  18. دوست Said:

    آغاز جتنا رومانٹک تھا اختتام اتنا ہی لٹھ باز۔ لیکن پوسٹ سولہ آنے سچی تھی۔

  19. واہ حجاب بہت خوب تحریر ہے۔ دِل خوش کر دیا 🙂

  20. امن ایمان Said:

    سہیلی بہتتتتتتتتتتتت خوب 🙂 سب کے اتنے جاندار کمنٹس کو پڑھنے کے بعد میرے پاس تو کچھ کہنے کو نہیں بچا۔

  21. اجکل کی محبت نہیں محبت کے نام پر دحبہ ہے ۔۔۔۔ محبت کا مقصد حاصل کرنا ہرز ہرگز نہیں ۔۔۔ ہاں جس کو چاہا وہ مل گئی تو اچھی بات ہے لیکن اگر نہیں ملی تو اس کی رسوائی گوارہ نہیں ۔ توبہ آج کل تو محبت ہے کہ نہیں ملنا ضروری ہے ، بعد میں تو نہیں اور سہی اور نہیں اور سہی ۔۔۔ ہر ایک اپنے آپ کو ہیرو سمجھنے لگا ہے ۔ اب تو حالت یہ کہ ہے کہ 35 سالہ ماما بھی یہی کہتے ہوئے نظر اتا ہے میں یہی کوئی 22 کا ہوں ۔۔۔

  22. خاکیوں کی محبت ہے۔۔۔ جب تک ملیں نا۔۔۔ تکمیل نہیں ہوتی۔۔۔ بیہودہ لوگ کرتے ہیں بیہودگیاں۔۔۔ رسوائی آج بھی گوارہ نہیں کرتے۔۔۔ باقی عوام نے محبت کے نام پر شغل میلہ لگا لیا ہے۔۔۔ اسکا کوئی کچھ نہیں کر سکتا۔۔۔ خیال رہے محبت اور بے راہ روی میں بڑا فرق ہوتا ہے۔۔۔

  23. hijabeshab Said:

    جاہل سنکی 😕

    نعیم اکرم ملک ، میں آپ کی بات سے متفق ہوں اب بھی ہیں ایسے لوگ مگر بہت کم ۔۔

    ایم اے مبین ، شکریہ ۔۔

    دوست شکریہ ۔۔

    شکریہ عادل بھیّا ۔۔۔

    بہت شکریہ پیاری سہیلی امن 🙂

    ملنے والی بات ٹھیک لکھی تانیہ ۔۔ ملاقات ضروری ہے چاہے کچھ ہو جدھر دیکھو گھوم رہے ہوتے ہیں لڑکے لڑکیاں ۔۔

    نعیم آپ نے کتنوں کو ملایا ہے اب تک 🙂

  24. میں نہیں ملواتا۔۔۔ میں کوئی رشتے کروانے والی مائی تھوڑی ہوں۔۔۔

  25. بھئی کئی تراکیب اور جملے تو خوب چست کیے جیسے

    ہر گل کھلنے کو تیار (جیسے ہو موسم بہار )

    پہلے کزن ہی محبوب ہوا کرتے تھے

    لڑکی کرے انکار تو بائے بائے کسی اور چہرے کو ہائے ہائے

    یو فون تم ہی تو ہو
    زونگ سب کہہ دو
    اس کے ساتھ جے زز بھی تو ہے

    اور سناؤ 🙂

  26. hijabeshab Said:

    شکریہ محب 🙂


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: