خوشی اور قناعت

اللہ تعالیٰ شاکی ہے کہ اتنی نعمتوں کے باوجود آدم کی اولاد ناشکری ہے اور انسان ازل اور ابد تک پھیلے ہوئے خدا کے سامنے خوفزدہ کھڑا بلبلا کر کہتا ہے یا باری تعالیٰ ! تیرے جہاں میں آرزوئیں اتنی دیر سے کیوں پوری ہوتی ہیں ؟
زندگی کے بازار میں ہر خوشی اسمگل ہو کر کیوں آتی ہے اس کا بھاؤ اس قدر تیز کیوں ہوتا ہے کہ ہر خریدار اسے خریدنے سے قاصر نظر آتا ہے ہر خوشی کی قیمت اتنے ڈھیر سارے آنسوؤں سے کیوں ادا کرنا پڑتی ہے۔
آقائے دوجہاں ایسے کیوں ہوتا ہے کہ جب بلاآخر خوشی کا بنڈل ہاتھ میں آتا بھی ہے تو اس بنڈل کو دیکھ کر انسان محسوس کرتا ہے کہ دکاندار نے اُسے ٹھگ لیا ہے۔جو التجا کی عرضی تجھ تک جاتی ہے اُس پر ارجنٹ لکھا ہوتا ہے اور جو مہر تیرے فرشتے لگاتے ہیں اُس کے چاروں طرف صبر کا دائرہ نظر آتا ہے ایسا کیوں ہوتا ہے باری تعالیٰ ؟؟
جس مال گاڑی میں تو انسانی خوشی کے بنڈل روانہ کرتا ہے وہ صدیوں پہلے چلتی ہے اور قرن بعد پہنچتی ہے لوگ اپنے اپنے نام کی بلٹی نہیں چھڑاتے بلکہ صدیوں پہلے مر کھپ گئی ہوئی کسی قوم کی خوشی کی کھیپ یوں آپس میں بانٹ لیتے ہیں جیسے سیلاب زدگان امدادی فنڈ کے سامنے معذور کھڑے ہوں ۔
خوشی کو قناعت میں بدلنے والے رب سے کوئی کیا کہے جب کہ آج تک اُس نے کبھی انسان کی ایجاد کردہ گھڑی اپنی کلائی پر باندھ کر دیکھی ہی نہیں۔
(بانو قدسیہ کی کتاب امر بیل سے لیا گیا اقتباس)

Advertisements

25 تبصرے »

  1. عثمان Said:

    یہ سارے لوگ بانو آنٹی کے پیچے کیوں پڑ گئے ہیں جی؟ 😦

  2. hijabeshab Said:

    عثمان اور کون پیچھے پڑا ہے ؟؟

  3. کیا خوب لکھتی ہیں۔بانو قدسیہ جی۔

  4. میں تو دو دن سختی سے پیچھے پڑا ہوں۔
    راجہ گدھ پڑھ رہا تھا

    • hijabeshab Said:

      یاسر آپ کو راجہ گدھ سمجھ آ گئی ؟؟ میں نے 1 بار پڑھی تو کچھ سمجھ نہیں آئی ۔۔ اُس کے بعد پتہ چلا مجھے کہ راجہ گدھ پڑھ کے لوگ اُس طرح ہی سوچتے ہیں ڈر کے مارے نہیں پڑھی پھر کہ کہیں میں بھی 😕

  5. کورِئیر سروس۔۔
    ٹی سی ایس ۔۔۔
    ریلوے کی مال گاڑی۔۔
    کچھ ان چیزوں پر لکھا ہے اپ نے اج۔۔
    تو پھر کیا طے پایا کہ سب سے اچھی سروس کس کی ہے۔۔

  6. جعفر Said:

    راجہ گدھ پڑھ کے اسی طرح سوچتے ہیں۔۔۔
    آپ کے خیال میں راجہ گدھ کا مرکزی خیال ہے کیا؟

  7. آبجیکٹیو رائیٹرز کا کمال فن ہی یہی ہوتا ہے کے ناکام کردار فضول باتیں کریں اور کامیاب کردار اچھی باتیں کریں ۔ آپ یہ بتائیں کے گول گپوں کی ترکیب کب پبلش کرنے جا رہی ہیں ۔

  8. Aniqa Naz Said:

    یاسر آپ کو راجہ گدھ سمجھ آ گئی ؟؟ میں نے 1 بار پڑھی تو کچھ سمجھ نہیں آئی ۔۔ اُس کے بعد پتہ چلا مجھے کہ راجہ گدھ پڑھ کے لوگ اُس طرح ہی سوچتے ہیں ڈر کے مارے نہیں پڑھی پھر کہ کہیں میں بھی :

    بانو قدسیہ نے اپنے کسی انٹرویو میں کہا تھا کہ تیس سال کی عمر سے پہلے پڑھنے والے اسکو دقت سے سمجھیں گے۔ اب اگر اس بات پہ مزید تبصرہ کروں تو میرا اکھڑ پن ہوگا۔ میرا خیال ہے کہ وہ لوگ
    لیکن جس بات کو بنیاد بنا کر آپ اسے پڑھنا نہیں چاہ رہی تو اسکی وجہ سے آپ دنیا کا بہترین ادب نہیں پڑھ پائیں گی اور نتیجے میں صرف نسیم حجازی یا رضیہ بٹ کے ناول ہاتھ آئیں گے۔
    میں آپکو یقین دلاتی ہوں کہ یہ ایک اچھا ناول ہے۔ اسکے علاوہ ممتاز مفتی کا ناول علی پور کا ایلی بھی ضرور پڑھیں۔ میں نے بیس، اکیس سال کی عمر میں پڑھا تھا۔ چار دن اسکو پڑھنے کے علاوہ کچھ نہیں کیا تھا۔ جب ختم ہو گیا تو بازار سے جا کر اسکی ذاتی کاپی ان پیسوں سے خریدی جو میری کئ مہینوں کی بچت یا کل جمع پونجی تھی۔
    اور اگر پھر بھی آپکو اپنے ایمان کا خطرہ ہے تو دشت سوس پڑھ ڈالیں۔ جمیلہ ہاشمی کا لکھا ہوا یہ ناول بہت خوبصورت نثر ہے۔ حیرت ہوتی ہے اتنی عمدہ زبان اور تحریر میں روانی کیسے لکھا گیا ہوگا۔ اسکو پڑھ کر آپ بیک وقت عش مجازی اور عشق حقیقی سے دو چار ہو جائیں گی۔
    مجھے اردو کا یہ ناول بے حد پسند ہے۔ ایک دفعہ کسی کو تحفے میں دے دیا تھا۔ دوسری دفعہ اسے حاصل کرنے کے لئے بڑی تگ و دو کرنا پڑی۔

  9. hijabeshab Said:

    بلا امتیاز ٹی سی ایس اچھی سروس ہے جلدی مل جاتا ہے تحفہ اگر کسی نے بھیجا ہو 🙂

    جعفر ، میں نے تو پڑھا ہی نہیں نہ ۔۔ لی ضرور شوق میں اب پڑھ کے بتا سکتی ہوں کہ مرکزی خیال کیا ہے آپ نے پڑھا ہے تو بتائیں ؟؟

    بلاگ پر خوش آمدید انیقہ ، آپ جو کچھ لکھتے لکھتے رک گئی ہیں ضرور لکھیئے مجھے پڑھ کر اچھا لگے گا ۔۔ اور میں نے راجہ گدھ صرف اس لیئے نہیں پڑھی کہ جس نے بھی پڑھی یہی کہا بہت مشکل ہے تو رکھ دی اُٹھا کر کہ کبھی پڑھ لوں گی ، نسیم حجازی اور رضیہ بٹ کو نہیں پڑھا میں نے ہاں مگر علی پور کا ایلی میرے پاس موجود ہے 2 بار پڑھ چکی ہوں ۔۔۔۔ رہا میرا ایمان تو وہ نہیں ڈولتا پکا ہے، آج کل عصمت چغتائی کا ناول “جاڑے کی چاندنی “ کی تلاش کر رہی ہوں سُنا ہے کہ بہت اچھا ہے آپ نے پڑھا ہے یہ ناول ؟

  10. hijabeshab Said:

    جاہل سنکی آپ کو گول گپّے کیسے یاد آئے ؟؟

  11. md Said:

    اگریگیٹر پر آپکا بلاگ پڑھ کر کچھ حیرت ذدہ ہو رہا تھا کہ یہ آپ کی تحریر ہے یا آپ میں کسی کی روح حلول کر گئی ہے ، بلاگ کھولنے اور پڑھنے پر ساری حیرت بھاگ گئی – – – انیقہ کے تبصرہ سے بہت خوشی ہوئی کہ وہ یاسر سے مخاطب ہوئیں یہ انیقہ کی بڑائی ہے — تمام انسان رویہ کے حوالے سے دوسرے انسان کے بارے میں اپنی ایک زاتی رائے بناتے ہیں، میری بھی انیقہ کے بارے میں ایک ذاتی رائے تھی مگر اس تبصرہ نے میری رائے بدل دی – آپکے اس بلاگ نے یہ ایک اچھا کام کیا ہے ۔اسی طرح آپکے بلاگ پر ہی عثمان نے عبدللہ بھائی کو – ٹی-وی ، انعام دیا تھا یہ نیک شگون بھی آپکے بلاگ پر ہُوا تھا— کیا زبردست بات ہے ۔ بہت شُکریہ

  12. md Said:

    اگریگیٹر پر آپکا بلاگ پڑھ کر حیرت ذدہ ہورہا تھا کہ آپ میں یقینا” کسی کی روح حلول کرگئی ، لیکن بلاگ کھولنے پر ساری حیرت بھاگ گئی— اس بلاگ پر یہ اچھی بات ہوئی ہے کہ انیقہ نے تبصرہ کے حوالے سے یاسر کو مخاطب کیا ہے انا کو آڑے آنے نہیں دیا یہ انیقہ کی بڑائی ہے —-ہر انسان رویہ کے حوالے سے دوسرے انسان کے بارے میں اپنی ایک ذاتی رائے رکھتا ہے ، انیقہ کے بارے میں بھی میں اپنی ایک ذاتی رائے رکھتا تھا مگر اس تبصر ے نے اسکی سمت بدل دی ہے- یاد ہے نا آپکے ہی بلاگ پر عثمان نے عبدللہ بھائی کو ،ٹی -وی ، دیا تھا — یہ کتنی زبردست باتیں ہیں — بہت شکریہ

  13. جعفر صاحب نے انکا زکر کیا اور آپنے انکو یاد کیا ۔ ہم نے انکی ترکیب کی فرمائش کر دی ۔

  14. hijabeshab Said:

    ایم ڈی آپ واقعی اتنے حیرت زدہ ہو گئے کہ آپ نے یہ نہیں دیکھا کہ ۔۔۔ انیقہ نے میرا لکھا ہوا جملہ جو میں نے یاسر کو لکھا وہ پیسٹ کیا ہے 🙂

    جاہل سنکی گول گپّے اگر بنائے تو تصویر پوسٹ کروں گی ویسے ارادہ نہیں ہے فی الحال بنانے کا ۔۔

  15. Aniqa Naz Said:

    یقیناً اب ایم ڈی صاحب اپنی سابقہ رائے پہ فی الفور جائیں گے۔ کل جب میں نے انکا تبصرہ پڑھا تو سوچا کہ تصحیح کر دوں پھر خیال آیا کہ اگر اسی طرح خدا عزت دلا رہا تھا تو اسکی نعمت کو ٹھکرانا نہیں چاہئیے۔
    حجاب، آپ نے یہ کیا کیا۔
    🙂

  16. Naeem Said:

    راجہ گدھ میں نے کوئی اکیس بائیس کی عمر میں پڑھا تھی۔۔۔ اب انتیس کا ہوں۔۔۔ا س وقت تو چٹخارہ سا ناول لگا۔۔۔ لیکن چند ماہ پہلے دوبارہ ہتھے چڑھ گیا۔۔۔ اس مرتبہ میرے خیالات مختلف ہیں۔۔۔ رہا علی پور کا ایلی، وہ تو میں سمجھتا ہوں بہت بڑا ناول ہے۔۔۔ میں نے بھی جب پڑھا تھا، ٹرانس کے عالم میں ہی پڑھا تھا اور بہت دن مجھ پر ناول کا اثر بھی رہا تھا۔۔۔ مزے کی بات پیپروں کے دنوں میں پڑھا تھا۔۔۔
    ایمان ڈول جانا کوئی بڑی بات نہیں ہوتی حجاب، لہٰذا بس دعا کرنی چاہیئے۔۔۔

  17. hijabeshab Said:

    نعیم ، ایمان ڈول جانا واقعی بڑی بات نہیں ۔۔ میرا بھی ڈول سکتا ہے بندی بشر ہوں ۔۔ بس دعا ہے کہ کبھی نہ ڈولے میرا ایمان ۔۔ آمین ۔

  18. sarah Said:

    یہ پوسٹ جب پڑھنا اسٹارٹ کی تو سوچا کہ حجاب کو دل کھول کر داد دوں گی اتنا زبردست لکھا ہے :)۔۔ لیکن آخر میں جب بانو قدسیہ دیکھا تو ارمانوں پڑ اوس پڑ گئی ۔۔ :S

  19. md Said:

    واقعی حجاب آپ نے یہ کیا کیا۔ ۔ ۔ ۔؟ عنیقہ صاحبہ آپ کے بارے میں میری جو ذاتی ہے اسکا ذکر میں نے اپنے تبصرہ میں بھی کیا ہے کہ آپ نے انا کو آڑے آنے نہیں دیا اور یاسر سے مخا طب ہو ئیں۔ جبکہ ایسا نہیں ہوا ہے ، تو میری ذاتی رائے یہ ہے کہ آپکی انا کا درجہ زیادہ بلندی پر ہے ۔ جب آپ نے عافیہ صدیقی پر لکھا جو لوگ عافیہ کو اپنے جزبات میں بلند درجہ پر رکھتے ہیں، اُنکا دل دُکھا ۔ یاسر نے رد عمل میں آپکے بارے میں ایسے ریمارکس دیئے کہ مجھے ذاتی طور پر اچھے نہیں لگے ، میں نے یاسر سے کہا جسکے بارے میں لکھے گئے ہیں جب وہ پڑھے گی تو اسکے دل کو کتنی تکلیف پہنچے گی ۔ میں نے ان سے درخواست کی کہ برائے مہربانی ایسے سخت جملے نہ لکھیں ۔ اور عنیقہ کو بھی مثال دینے میں احتیاط کرنی چاہیئے تھی ۔ لیکن یاسر کے جواب سے مجھے ایسا محسوس ہُوا کہ شاید وہ مجھے آپکے کیمپ کا بندہ سمجھا ہو ۔ میں نے آج تک کوئی ناول نہیں پڑھا ہے آپنے اتنی تعریف کی ہے تو اب میں پڑھوں گا ۔ آپ نے لکھا ہے کہ جمیلہ ہاشمی کا ناول پڑھ نے سے عشق مجازی اور عشق حقیقی کی سمجھ آجاتی ہے ۔ میرے خیال میں جس کو یہ سمجھ آجاتی ہے اُسکی کی انا ختم ہوجاتی ہے ۔ ۔ ۔ ۔حجاب آپ نے لکھا ہے کہ ایمان ڈول جا نا بڑی بات نہیں ، میرے خیال میں ایمان کا ڈول جا نا ممکن ہی نہی ہے اگر اس ایمان میں آپ کی ذات شامل ہو ، جب ایمان میں خود کی ذات شامل ہوجاتی
    ہے تو انسان کو خدشات سے آزادی مل جاتی ہے ۔ پھر ایمان کے ڈولنے کا سوال ہی پہدا نہیں ہوتا ہے۔

  20. Aniqa Naz Said:

    ایم ڈی صاحب، یہ آپ کا نہیں بلاگستان کے اکثر لوگوں کا مسئلہ ہے۔ انہیں میری تحاریر نہیں میرے بارے میں کہنے کا لطف لینا ہوتا ہے۔ یاسر جاپانی نے جو کچھ لکھا عافیہ کے دفاع میں اس سے عافیہ کا دفاع نہیں ہوا بلکہ یہ کسی عام سی ذہنیت کے شخص کو بھی سمجھ میں آتا کہ وہ ہیں اصل پاکستانی جو خواتین کی بس یہی عزت کر سکتے ہیں۔ اس لئے میرا کسی مطالبہ نہیں کہ میری عزت کریں۔ وہ کسی کی نہیں کر سکتے۔ آپ سب لوگ مجھے کہتے ہیں مگر در حقیقت می اندر یہ عیب نکالنے والے خود اس چیز میں گوڈوں گوڈوں ڈوبے ہوئے ہیں۔ لیکن فی الوقت انہیں یہ نظر نہیں آتا کیونکہ ایک ایسی نظریاتی ہم آہنگی نے ان سب کو جوڑ رکھا ہے جس کے یہ پیروکار نہیں محض اپنی دوکان چمکانے اور محض اپنی دل کو جعلی تسلی دینے کے لئے یہ سب کرتے ہیں۔
    رہا یہ عشق حقیقی کو سمجھنے کا سوال۔ اگر یہ ان لوگوں کو سمجھ میں آتا جو اسکے دعوی کرتے ہیں تو آج ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ نہ کر رہے ہوتے اور یہ دیکھ کر مجھ جیسے لوگ حیران نہ ہوتے کہ لوگوں کو بموں کے ذریعے اڑانے والوں کے اتنے طرفدار اور ہر ایک عشق الہی میں ڈوبا ہوا۔
    میری انا کیسے ختم ہوگی۔ کیا ایسے کہ میں لوگوں کے غلط بیانات اور خیالات پہ کچھ نہ لکھوں، میں انہیں یہ نہ بتاءوں کہ آپ اپنی فطرت میں کس قدر منافقت رکھتے ہیں اور کسی اور کو کیا اپنے آپکو نہیں جانتے، میری نام نہاد انا کیسے ختم ہوگی جب میں ایک خلقت کی ہاں میں ہاں ملاتی رہوں چاہے اسکی ضرورت ہو یا نہ ہو، میری انا کیسے ختم ہوگی ایسے کہ جو مجھَ معلوم ہے اسے ظاہر نہ کروں اور اندھوں میں اندھا بنی رہوں۔ لوگ ہاءو ہو کریں تو ہاءو ہو کروں لوگ نوحے پڑھیں تو نوحہ پڑھوں۔
    یہ سب کرنے کے لئے مجھے بلاگنگ کرنے کی ضرورت نہیں۔ لوگوں کی جراءت اور ہمت یہ ہے کہ میرے بلاگ پہ اپنے تبصرے نہیں لکھیں گے مگر بلاگستان سے فیس بک تک اپنے دل کا زہر ادھر ادھر لکھتے پھریں گے باقی لوگ آ کر ان کو شاباش دیں گے۔۔ ایسے بزدل اور نالائق لوگوں سے مجھے کوئ ہمدردی ہے نہ دلچسپی۔ یہی وہ چیز ہے جسے آپ انا کہتے ہیں۔
    اور میں اسے کہتی ہوں، مجھے اسکی پرواہ نہیں ہے۔ یاسر نے عافیہ کی حمایت میں میرے لئے وہ کچھ لکھا جو وہ عام خواتین کے متعلق اپنے دل میں رائے رکھتے ہیں۔ ااور جسطرح وہ انکے بارے میں سمجھتے ہیں۔ اگر یہی عافیہ سر سے حجاب نہ اوڑھتی اور اسے امریکن نہ لے جاتے تو انہیں اسکی ذرا فکر نہ ہوتی۔ خیر، اس سے پہلے بھی وہ اس طرح کی زبان لکھ چکے ہیں لیکن ایک طبقے کے لئے نہ وہ غیر اخلاقی ہیں، نہ اس میں انا ہے، نہ اس میں زہر ہے۔ ایک بڑی تعداد نے انکا کندھا تھپتھپایا۔ مجھے اس سے کیا فرق پڑا۔ البتہ اور بہت سے خاموش پڑھنے والوں کو اندازہ ہوا کہ وہ جو عافیہ کی اخلاقی مدد کرنا چاہتے ہیں خود انکی اخلاقیات کس درجے پہ ہیں۔
    اور یہ صرف یاسر جاپانی ہی نہیں اور بھی دیگر لوگ ہیں اور انکے مداح۔ تو میں اب اس چیز کی پرواہ نہیں کرتی۔ زندگی کے اس مقام تک میں بہت سارے مراحل اور تجربات سے گذر کے پہنچی ہوں۔ میری سمجھ بھی کام کرتی ہے۔ مجھے بھی لوگوں کی نفسیات اور انکے رد عمل کی خبر ہوتی ہے۔ مجھے معلوم ہے کس کو اہمیت دینی چاہئیے اور کس کو نہیں۔

  21. hijabeshab Said:

    سارہ میں حجاب ہوں ۔۔ ایک خیال سے افسانہ بنا کر بلاگ پر پوسٹ تو کر سکتی ہوں ۔۔ بانو قدسیہ جیسا نہیں لکھ سکتی 😦

    ایم ڈی ، میں نے نہیں نعیم نے لکھا ہے کہ ایمان ڈول جانا بڑی بات نہیں ، میں نے لکھا تھا میرا ایمان نہیں ڈولتا ۔۔۔ اس پر نعیم نے لکھا کہ بڑی بات نہیں بس دعا کرنی چاہیئے تو کرلی دعا ۔۔۔ جبکہ میرا خیال ہے کہ میرا ایمان نہیں ڈول سکتا اتنا جانتی ہوں میں خود کو ۔۔۔

    انیقہ ۔۔ انا کے حوالے سے جو باتیں آپ نے لکھی ہیں کیا خوب لکھی ہیں 🙂 بلاگ سے باہر میرے ساتھ بھی کچھ یہی ہوتا ہے کہ جو کچھ مجھے معلوم ہے مجھے ٹھیک لگتا ہے اُس کو اپنے اندر دفن کرکے دوسروں کی ہاں میں ہاں ملاؤں تو سب خوش ۔۔ بلاگ پر اس لیئے نہیں ہوتا کہ میں بحث نہیں کرتی ۔۔

  22. md Said:

    ہائیں یہ کیا ہوا دوبارہ وہی غلطی ۔ ۔ ۔ ۔ ۔انسان خطا کا پُتلا نہ ہوتا تو وہ اس دنیا میں بھی نہ ہوتا مزے سے جنت میں ۔ مگر سر سید نے جنت کا جو نقشہ کھینچا ہے وہ عام تصور سے بالکل ہٹ کر ہے۔ انیقہ صاحبہ- آپ نے اپنا نقطہ نظر واضع کیا بہت شکریہ – مائی بھاگی کے حوالے سے کسی تبصرہ پر آپکی دل آزاری ہوئی ہو تو اسکے لئے میں معزرت خواں ہوں ۔لیکن میں اپنے موقف پر معزرت خواں نہیں ہوں – بہت شکریہ

  23. hijabeshab Said:

    ایم ڈی ، میں بھی خطا کی پتلی ہوں مگر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ چھوڑیں بلاوجہ کیا بحث کرنی 🙄


{ RSS feed for comments on this post} · { TrackBack URI }

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: